تاریخ شائع کریں2022 4 December گھنٹہ 15:58
خبر کا کوڈ : 575705

احمد مسعود: افغانستان کے بارے میں امریکہ کا نقطہ نظر مبہم ہے

مسعود نے کہا: اس مرحلے پر جغرافیہ کو لینا اور اضلاع کے مراکز اور شاید صوبوں کو لینا ہمارے اختیار میں ہے، لیکن یہ ہماری حکمت عملی نہیں ہے۔ "ان کے مطابق، مزاحمتی محاذ کے پاس فی الحال انہیں برقرار رکھنے کی سہولیات نہیں ہیں۔
احمد مسعود: افغانستان کے بارے میں امریکہ کا نقطہ نظر مبہم ہے
افغانستان کے قومی مزاحمتی محاذ کے رہنما احمد مسعود نے کہا ہے کہ افغانستان کے بارے میں واشنگٹن کی پالیسی نہ صرف غیر واضح ہے بلکہ اس مبہم رویے کا جاری رہنا اور امریکہ کے حکمت عملی دونوں کے عوام کو بھاری قیمت ادا کرنا پڑ سکتی ہے۔ افغانستان اور امریکہ۔

تقریب خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق احمد مسعود نے حال ہی میں "وائس آف امریکہ" کے دری سیکشن کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ جب تک طالبان اپنے "ظلم، جبر، استبداد اور جہالت کو جاری رکھیں گے، ہمارے پاس اس کے سوا کوئی چارہ نہیں کہ فوجی ذرائع استعمال کرنے اور اپنا دفاع کرنے کے ہے۔ اگر طالبان کبھی بھی معقول اور منطقی راستہ اختیار کرنے کے لیے تیار ہیں تو قومی مزاحمتی محاذ مذاکرات اور بات چیت کے لیے تیار ہے۔

وائس آف امریکہ کی ویب سائٹ کے دری سیکشن نے نشاندہی کی کہ طالبان کے افغانستان پر کنٹرول حاصل کرنے کے بعد، احمد مسعود کی قیادت میں مزاحمتی محاذ نے صوبوں کے کئی حصوں بالخصوص پنجشیر، بغلان اور تخار میں طالبان کے خلاف مزاحمت جاری رکھی، لیکن مزاحمتی محاذ احمد مسعود کے حوالے سے انہوں نے لکھا: فی الحال جغرافیائی توسیع مزاحمتی محاذ کی حکمت عملی کا حصہ نہیں ہے۔

مسعود نے کہا: اس مرحلے پر جغرافیہ کو لینا اور اضلاع کے مراکز اور شاید صوبوں کو لینا ہمارے اختیار میں ہے، لیکن یہ ہماری حکمت عملی نہیں ہے۔ "ان کے مطابق، مزاحمتی محاذ کے پاس فی الحال انہیں برقرار رکھنے کی سہولیات نہیں ہیں۔

احمد مسعود نے وائس آف امریکہ کو بتایا کہ وہ فی الحال مزاحمت کی صلاحیت اور حمایت کو بڑھانے پر کام کر رہے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ "اس کے ساتھ ساتھ، ہم سیاسی حل تلاش کرنے کی بھی کوشش کر رہے ہیں۔"

احمد مسعود نے یہ بھی کہا ہے کہ "ہم نے محسوس کیا کہ طالبان نے کچھ نہیں بدلا ہے، لیکن وہ اب بھی یک طرفہ، پتھراؤ اور آمرانہ پالیسی پر زور دیتے ہیں۔"

اس انٹرویو کی مکمل تفصیل جمعرات کو اس امریکی میڈیا کے سیٹلائٹ چینل پر نشر ہونے جا رہی ہے۔
https://www.taghribnews.com/vdciuwawwt1ayy2.s7ct.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس