تاریخ شائع کریں2022 28 May گھنٹہ 00:02
خبر کا کوڈ : 551221

بیت المقدس میں صیہونی جنگجوؤں کے ہاتھوں فلسطینی نوجوان شہید

اسرائیلی فوج نے جنوبی بیت المقدس میں ایک 14 سالہ فلسطینی لڑکے کو شہید کر دیا ہے۔
بیت المقدس میں صیہونی جنگجوؤں کے ہاتھوں فلسطینی نوجوان شہید
 فلسطینی وزارت صحت نے اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی قابض فوج نے ایک 14 سالہ فلسطینی نوجوان کو گولی مار کر ہلاک کر دیا ہے۔

اس فلسطینی کی شہادت بیت المقدس کے جنوب میں "شہر سبز" میں صیہونی ملیشیا کے ساتھ فلسطینیوں کی تصادم کے دوران ہوئی۔

مبینہ طور پر 14 سالہ فلسطینی کا نام "زید محمد غنیم" تھا۔ 

جمعہ کے روز مقبوضہ علاقوں میں پیشرفت اس وقت سامنے آئی جب عبرانی زبان کے میڈیا نے فلیگ مارچ پر تل ابیب کی بڑھتی ہوئی سکیورٹی اور فوجی خدشات کی خبر دی ہے اور واشنگٹن نے اس پر نظر ثانی کا مطالبہ کیا ہے۔

مقامی رپورٹوں کے مطابق صہیونی عسکریت پسند فلیگ مارچ کی تیاری جاری رکھے ہوئے ہیں۔ کل (جمعرات)، سرحدی پولیس کی تین ٹیمیں تل ابیب کے فوجی دستوں میں شامل ہوئیں تاکہ مارچ کے دوران فورسز کو تقویت دینے میں مدد کی جا سکے۔ اس گروپ میں شامل ہونے کے لیے تقریباً 200 مزید فوجیوں کو تربیت دی جا رہی ہے۔

دوسری جانب فلسطینی مزاحمتی جماعتوں نے عوامی تحریک کا اعلان کرتے ہوئے صیہونی حکومت کو کسی بھی حماقت اور فلیگ مارچ کے ذریعے مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے سے خبردار کرتے ہوئے تاکید کی ہے کہ یہ مارچ بارود کا بیرل ہے اور اس سے خطے میں آگ بھڑک اٹھے گی۔

یہ فلیگ مارچ 1967 کی جنگ میں صیہونی حکومت کی طرف سے مقبوضہ بیت المقدس کے پرانے حصے پر قبضے کی سالگرہ کے موقع پر منعقد کیا جاتا ہے۔ صیہونیوں کا دعویٰ ہے کہ بیت المقدس مکمل طور پر اس جعلی حکومت کا دارالحکومت ہے لیکن فلسطینی عوام کا اصرار ہے کہ بیت المقدس ان کے ملک کا دارالحکومت ہوگا۔

اس سلسلے میں عبرانی اخبار Ma'ariu نے حال ہی میں اعتراف کیا ہے کہ صیہونی حکومت غزہ میں فلسطینی اسلامی مزاحمتی تحریک (MAS) کا مقابلہ کرنے سے قاصر ہے۔ اخبار نے رپورٹ کیا ہے کہ صیہونی حکومت نے غزہ میں تحریک حماس کو تباہ کرنے کے لیے بہت سی جنگیں اور فوجی کارروائیاں کیں، لیکن کہیں نہیں گئی۔ 
http://www.taghribnews.com/vdcf0ydtyw6dt0a.k-iw.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس