تاریخ شائع کریں2021 24 September گھنٹہ 22:29
خبر کا کوڈ : 520097

افغانستان سے منشیات کی اسمگلنگ کے تمام راستے بند

طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے افغانستان سے منشیات کی اسمگلنگ کے راستے بند کرنے کے سلسلے میں روس سے مدد مانگی ہے۔ ذبیح اللہ مجاہد نے کہا کہ افغانستان میں حشیش کی کاشت ایک بڑا مسئلہ شمار ہوتا ہے اور یہ بہت اہم ہے کہ کسانوں کے سامنے اس کا متبادل پیش کیا جائے۔
افغانستان سے منشیات کی اسمگلنگ کے تمام راستے بند
طالبان نے اعلان کیا ہے کہ وہ افغانستان سے منشیات کی اسمگلنگ کے تمام راستے بند کر دیں گے۔

طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے افغانستان سے منشیات کی اسمگلنگ کے راستے بند کرنے کے سلسلے میں روس سے مدد مانگی ہے۔ ذبیح اللہ مجاہد نے کہا کہ افغانستان میں حشیش کی کاشت ایک بڑا مسئلہ شمار ہوتا ہے اور یہ بہت اہم ہے کہ کسانوں کے سامنے اس کا متبادل پیش کیا جائے۔

اس رپورٹ کے مطابق دو ہزار ایک میں افغانستان میں امریکیوں کے آنے کے بعد سے اس ملک میں منشیات کی پیداوار میں سترہ سے چالیس فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

طالبان کے ترجمان نے اشرف غنی کو واپس لانے کے بارے میں کہا کہ ہم اشرف غنی کو واپس لانے کی کوشش میں نہیں ہیں لیکن اس رقم کی بینک میں منتقلی چاہتے ہیں جو وہ اپنے ساتھ لے گئے ہیں۔ طالبان گروہ کے کابل میں داخل ہوتے ہی افغان صدر اشرف غنی فرار کرگئے تھے اور ان کی حکومت گرگئی تھی۔
 
http://www.taghribnews.com/vdccoxqpm2bqix8.c7a2.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس