تاریخ شائع کریں2021 25 July گھنٹہ 22:07
خبر کا کوڈ : 512879

خوزستان کے بارے میں انسانی حقوق کی ہائی کمشنر کا بیان الزام تراشیوں پر مبنی ہے

 وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادے نے انسانی حقوق کی ہائی کمشنر میشل بیشلے کے بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ خوزستان کے بارے میں ان کا بیان غلط معلومات اور الزام تراشیوں پر مبنی ہے۔
خوزستان کے بارے میں انسانی حقوق کی ہائی کمشنر کا بیان الزام تراشیوں پر مبنی ہے
ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے، ایرانی صوبے خوزستان کے بارے میں اقوم متحدہ کے انسانی حقوق کی ہائی کمشنر کے بیان کو اندرونی معاملات میں مداخلت قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا ہے۔

 وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادے نے انسانی حقوق کی ہائی کمشنر میشل بیشلے کے بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ خوزستان کے بارے میں ان کا بیان غلط معلومات اور الزام تراشیوں پر مبنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ غیرمصدقہ، من گھڑت اور غلط اطلاعات پر مبنی بیان پر افسوس ہی کیا جاسکتا ہے۔ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ خوزستان کے عوام کے مسائل کے حل کی غرض سے ایرانی حکام، عدلیہ، سکیورٹی اداروں اور ذرائع ابلاغ کی کوششوں اور اقدامات کو خاطر میں لائے بغیر، جاری کیے جانے والے بیان سے سیاسی محرکات کا پتہ چلتا ہے اور اس کی کوئی اہمیت نہیں رہتی۔

انہوں نے کہا کہ یہ بیان، انسانی حقوق کے کسی عالمی عہدیدار کے بیان سے زیادہ مخاصمانہ لب و لہجے کا حامل ایک سیاسی بیان معلوم ہوتا ہے۔ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے واضح کیا کہ کسی بھی ملک کے آبی وسائل کے انتظام کے بارے میں اظہار رائے کرنا، نہ تو انسانی حقوق کمشنر کے دائرہ اختیار میں آتا ہے اور نہ ہی اس کے کسی ذیلی محکمے کو اس بارے میں بیان دینے کا حق حاصل ہے۔

انہوں نے کہا کہ خوزستان میں پانی کا بحران، ایک جانب خشک سالی جیسے قدرتی عمل کا نتیجہ ہے تو دوسری جانب ایران پر مسلط کردہ پابندیوں کے نتائج میں سے ایک ہے جس کی وجہ سے تہران اس صوبے میں پانی کے بحران کو حل کرنے کے لیے لازمی ٹیکنالوجی کے حصول اور سرمایہ کاری سے قاصر رہا ہے۔
 
http://www.taghribnews.com/vdcbz5bs9rhb8wp.kvur.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس