تاریخ شائع کریں2021 15 June گھنٹہ 18:49
خبر کا کوڈ : 507970

ترک صدر طیب اردوان اور امریکی صدر جو بائیڈن نے دوبدو ہونے والی پہلی ملاقات

اس موقع پر ترک صدر طیب اردوان نے جو بائیڈن کے ساتھ ملاقات کو مخلصانہ کاوش اور نتیجہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان کئی مہینوں کی عداوت کے باوجود ایسا کوئی ایشو نہیں ہے جو حل نہ ہوسکے۔
ترک صدر طیب اردوان اور امریکی صدر جو بائیڈن نے دوبدو ہونے والی پہلی ملاقات
ترک صدر طیب اردوان اور امریکی صدر جو بائیڈن نے دوبدو ہونے والی پہلی ملاقات کو مثبت اور مخلصانہ بات چیت قرار دیتے ہوئے کہا کہ متعدد معاملات پر مذاکرات کا عمل دونوں ممالک کے حکام کے درمیان جاری رہے گا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق ترک صدر طیب اردوان نے برسلز میں نیٹو سربراہی اجلاس کے دوران امریکی صدر جوبائیڈن سے پہلی ملاقات کی۔ ایک گھنٹے تک جاری رہنے والی دو بدو ملاقات میں ایف-35 فائٹر طیاروں کے تنازعے اور افغانستان کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات کے بعد میڈیا سے مختصر گفتگو میں امریکی صدر جوبائیڈن نے بل مشافہ ہونے والی بات چیت کو کافی مثبت اور خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ  ہمارے اعلیٰ سرکاری حکام کے درمیان مذاکرات کا عمل جاری رہے گا اور دونوں ممالک کے درمیان مذاکرات میں پیش رفت کے لیے پُرامید ہوں۔

اس موقع پر ترک صدر طیب اردوان نے جو بائیڈن کے ساتھ ملاقات کو مخلصانہ کاوش اور نتیجہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان کئی مہینوں کی عداوت کے باوجود ایسا کوئی ایشو نہیں ہے جو حل نہ ہوسکے۔

ترک صدر نے امریکا کے ساتھ برسوں پرانی دوستی کی بحالی پر زور دیتے ہوئے مزید کہا کہ جو بائیڈن کے ساتھ وسیع تر بات چیت میں علاقائی امور پر تعاون کا احاطہ کیا گیا ہے جس پر دونوں ممالک کے وفد بات چیت جاری رکھیں گے۔

واضح رہے کہ ملاقات سے قبل ترک صدر نے امریکی فوجیوں کے انخلا کے بعد افغانستان میں امن و استحکام کو برقرار رکھنے اور کابل ایئرپورٹ کی حفاظت کی پیشکش کرتے ہوئے کہا تھا کہ امریکا ان معاملات پر ترکی پر بھروسہ کرسکتا ہے۔
http://www.taghribnews.com/vdchqqnmv23nvwd.4lt2.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس