تاریخ شائع کریں2021 13 June گھنٹہ 15:15
خبر کا کوڈ : 507656

اسلامی استقامتی محاذ کے خلاف امارات کی ہرزہ سرائی پر حماس کا ردعمل

حماس کے ترجمان نے متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ کی حماس اور حزب اللہ کے خلاف ہرزہ سرائی پر ردعمل دکھاتے ہوئے کہا کہ حماس کو دہشت گرد قرار دیا جانا عربیت کے دعووں کے منافی ہے۔
اسلامی استقامتی محاذ کے خلاف امارات کی ہرزہ سرائی پر حماس کا ردعمل
اسلامی استقامتی محاذ کے خلاف امارات کی ہرزہ سرائی پر حماس نے ردعمل ظاہر کیا ہے۔

حماس کے ترجمان نے متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ کی حماس اور حزب اللہ کے خلاف ہرزہ سرائی پر ردعمل دکھاتے ہوئے کہا کہ حماس کو دہشت گرد قرار دیا جانا عربیت کے دعووں کے منافی ہے۔

حماس کے ترجمان حازم قاسم نے متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ عبداللہ بن زائد کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ مغربی ملکوں کے اکسانے پر اس طرح کی بیان بازی عرب قوم پرستی کے ان کے دعووں سے تضاد رکھتی ہے۔

واضح رہے کہ عبداللہ بن زائد نے امریکی یہودیوں کی ایک نیوز ایجنسی کے ساتھ اپنے انٹرویو میں کہا تھا کہ یہ بات بہت افسوسناک ہے کہ بعض ممالک حماس ، حزب اللہ یا اخوان المسلمین جیسی تنظیموں کے تعلق سے کھل کر عمل نہیں کرتے۔

عبد اللہ بن زائد نے کہا تھا یہ بات مضحکہ خيز ہے کہ بعض ملکوں کی حکومتیں کسی تنظیم کے عسکری ونگ کو تو دہشت گرد قرار دیتی ہیں اور اس کے سیاسی ونگ کو چھوٹ دیدی جاتی ہے، حالانکہ ان کے درمیان کوئی فرق نہیں ہے۔

گزشتہ برس ستمبر کے مہینے میں صیہونی حکومت اور متحدہ عرب امارات نے تعلقات کو معمول پر لانے کے لئے ایک معاہدے دستخط کئے ہیں جس کے بعد سے فریقین کے درمیان رابطے روزبروز بڑھتے جارہے ہیں۔
 
http://www.taghribnews.com/vdciwyawqt1auq2.s7ct.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس