تاریخ شائع کریں2021 16 May گھنٹہ 22:16
خبر کا کوڈ : 504212

اسرائیل کی بنیادوں کے کھوکھلا ہونے کا عمل شروع

ڈی چوک پر ریلی کے شرکاسے خطاب کرتے ہوئے سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ اسرائیل نے جو آگ کا کھیل شروع کیا ہے اس کا انجام اسرائیل کی نابودی کی شکل میں سامنے آئے گا۔
اسرائیل کی بنیادوں کے کھوکھلا ہونے کا عمل شروع
سربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان نے کہا کہ اسرائیل کی بنیادوں کے کھوکھلا ہونے کا عمل شروع ہو چکا ہے۔ دنیا کے باضمیر مسلم حکمران بہت جلدیہود و نصاری کے خلاف باہم نظر آئیں گے۔ فلسطینی قوم ترنوالہ نہیں جسے کوئی بھی آسانی سے نگل لے یہ اسرائیل سمیت اس کے تمام حواریوں کے گلے کی ہڈی بن چکا ہے۔فلسطین میں آبادی والے علاقوں پر اسرائیلی حملے اسی بوکھلاہٹ کا نتیجہ ہے۔

اسلام آباد/مظلومین فلسطین سے یکجہتی اور اسرائیلی بربریت کے خلاف دارلحکمومت اسلام آباد میں عظیم الشان کار اور موٹر بائیک ریلی کاانعقاد کیا گیا ۔احتجاجی ریلی جی نائن ٹو کمیونٹی سنٹر سے سے ڈی چوک تک نکالی گئی جس میں سینکڑوں کی تعداد میں افراد نے شرکت کی۔ریلی کی قیادت سربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے کی۔ ریلی میں امامیہ اسٹوڈٹنس آرگنائزیشن ، ملی یکجہتی کونسل کے قائدین بھی شریک تھے۔ شرکاء گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں پر سوار تھے اور پلے کارڈ اٹھار رکھے تھے جن پر اسرائیل کی بربریت اور عالمی طاقتوں کی بے حسی کے خلاف نعرے درج تھے

ڈی چوک پر ریلی کے شرکاسے خطاب کرتے ہوئے سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ اسرائیل نے جو آگ کا کھیل شروع کیا ہے اس کا انجام اسرائیل کی نابودی کی شکل میں سامنے آئے گا۔

انہوں نے کہا کہ اسرائیل کی بنیادوں کے کھوکھلا ہونے کا عمل شروع ہو چکا ہے۔ دنیا کے باضمیر مسلم حکمران بہت جلدیہود و نصاری کے خلاف باہم نظر آئیں گے۔مزید کہا کہ فلسطینی قوم ترنوالہ نہیں جسے کوئی بھی آسانی سے نگل لے یہ اسرائیل سمیت اس کے تمام حواریوں کے گلے کی ہڈی بن چکا ہے۔فلسطین میں آبادی والے علاقوں پر اسرائیلی حملے اسی بوکھلاہٹ کا نتیجہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اپنی جغرافیائی اور نظریاتی سرحدوں کا دفاع کرنے والی مزاحمتی تحریکوں کے جرات و حوصلے کو سلام پیش کرتے ہیں۔ اس وقت دنیا کا ہر باشعور مسلمان اپنے فلسطینی بھائیوں کے اصولی موقف کا دفاع کرتا نظر آ رہا ہے۔ مزید بیان کیا کہ نام نہاد انسانی حقوق کے علمبرداروں کی اسرائیلی بربریت پر خاموشی ان کی متعصب ذہنیت کو آشکار کر رہی ہے۔اس غیر منصفانہ طرز عمل سے غیر مسلموں کی نظر میں عالم اسلام کی حیثیت کا بخوبی اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ حقیقت طے شدہ ہے کہ اس وقت دنیا بھر میں دو متحارب گروہ ہیں۔ایک وہ ممالک جو یہود و نصاری کے خلاف اپنے اسلامی تشخص کے ساتھ برسرپیکار ہیں اور دوسرے وہ جو مصلحت اور مفادات کی سیاست کو مقدم سمجھتے ہوئے مسلمانوں کے دشمنوں کی خوشنودی حاصل کرنا چاہتے ہیں چاہے وہ خاموش رہ کر ہو یا پھر طاغوت و استعمار کا ساتھ دے کر۔اس میں اول الذکر کا تعلق حق اور ثانی الذکر کا تعلق باطل سے ہے۔انہوں نے کہا کہ یہود و نصاری مسلمانوں کے دشمن ہیں یہ الہامی فیصلہ ہے۔ اس میں کوئی دوسری رائے نہیں۔ اسرائیل کے خلاف تمام مسلمان حکمرانوں کو باہم ہو جانا چاہئے۔ جو اسلامی ریاست فلسطینی مسلمانوں کے خلاف صیہونیوں کی حمایت کرے گی اس کا یہ عمل اسلام کے خلاف کھلی جنگ تصور کیا جائے گا۔

آخر میں مسلم حکمرانوں سے مخاطب ہو کر کہا کہ یہ وقت بیدار ہونے کا ہے۔ اگر انہوں نے اپنی آنکھیں نہ کھولیں تو اس کا خیمازہ ان کی آنے والی نسلوں کو بھگتنا پڑے گا۔

ریلی میں جماعت اسلامی کے نائب امیر میاں اسلم تحریک نوجوانان پاکستان کے مرکزی رہنما عبداللہ گل ملی یکجہتی کونسل کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل ثاقب اکبر سمیت مذہبی وسماجی شخصیات نے شرکت اور خطاب کیا۔
 
http://www.taghribnews.com/vdcdfo0kxyt0zx6.432y.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس