تقريب خبررسان ايجنسی 26 Sep 2021 گھنٹہ 18:14 http://www.taghribnews.com/ur/news/520394/عالم-دین-علامه-حسن-زاده-آملی-عارضہ-قلب-میں-مبتلا-ہونے-کے-بعد-کل-اس-دنیا-سے-رخصت-ہوگئے -------------------------------------------------- ٹائٹل : عالم دین علامه‌ حسن‌ زاده‌‌ آملی عارضہ قلب میں مبتلا ہونے کے بعد کل اس دنیا سے رخصت ہوگئے -------------------------------------------------- علامه‌ حسن‌ زاده‌‌ آملی ایرانی تاریخ کے مطابق 1307 ہجری شمسی کے اواخر میں آمل شہر کے ابرا نامی علاقے میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے 6 سال کی عمر سے ہی گھر میں لکھنا اور پڑھنا شروع کیا اور 1323 ہجری شمسی میں انہوں نے حوزہ علمیہ میں تعلیم حاصل کرنے کا سلسلہ شروع کیا۔ متن : عالم اسلام کے مشہور و معروف عالم دین علامه حسن زاده آملی عارضہ قلب میں مبتلا ہونے کے بعد کل اس دنیا سے رخصت ہوگئے۔ ایران پریس کی رپورٹ کے مطابق عالم ربانی علامه حسن زاده آملی کافی عرصے سے علیل تھے اور گزشتہ شب 93 سال کی عمر وہ دار فانی سے رخصت ہو گئے۔ علامه حسن زاده آملی ایرانی تاریخ کے مطابق 1307 ہجری شمسی کے اواخر میں آمل شہر کے ابرا نامی علاقے میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے 6 سال کی عمر سے ہی گھر میں لکھنا اور پڑھنا شروع کیا اور 1323 ہجری شمسی میں انہوں نے حوزہ علمیہ میں تعلیم حاصل کرنے کا سلسلہ شروع کیا۔ ذو الفنون اور ابوالفضائل کہلانے والے علامه حسن زاده آملی نے علامه طباطبایی، سید مہدی قاضی طباطبائی ،آیت اللہ سید محمد حسن الہی، آیت اللہ ابوالحسن شعرانی، آیت اللہ مرزا مہدی الٰہی قمشہ ای، آیت اللہ شیخ محمد تقی آملی، آیت اللہ مرزا ابوالحسن رفیعی قزوینی، آیت اللہ شیخ حسین فاضل تونی، آیت اللہ مرزا احمد آشتیانی اور آیت اللہ سید احمد لواسانی جیسی عظیم شخصیتوں سے کسب فیض کیا۔ علامه حسن زاده آملی نے ادبی، ریاضی، فقہی، رجالی، تفسیری، روائی، کلامی، فلسفی و عرفانی اور دیگر موضوعات پر سو سے زائد گرانقدر اور نفیس تصنیفات و تالیفات کی تخلیق کی۔ رہبر انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای، صدر مملکت سید ابراہیم رئیسی اور دوسرے اعلی حکام نے آپ کے انتقال پر آپ کے اہلخانہ کو تعزیت و تسلیت پیش کی۔ مزید دیکھیئے:آیت اللہ حسن زادہ آملی کی رحلت پر قائد انقلاب اسلامی کا تعزیتی پیغام