آج عالم اسلام کا مقابلہ انحرافی اور دہشت تنظیموں سے ہے
علماء جدید شرائط کے مطابق فتاویٰ صادر کریں اور حیات بخش امور میں تجدید نظر کریں
وحدت کے ساتھ،فرقہ ضالہ اورانحرافی موج کا ثابت قدمی کے ساتھ مقابلہ کیا جائے
تاریخ شائع کریں : يکشنبه ۳۰ مهر ۱۳۹۶ گھنٹہ ۰۰:۴۳
موضوع نمبر: 289774
 
مصر کے وزیر اوقاف نے کہا ہے کہ بعض غیرعالم افراد کی جانب سے فتوے کا صدور انحرافی گروہو کی ایجاد کاسبب بنا ہے، ضرورت پڑنے پر علماء اس کا مقابلہ کریں گے۔
   
تقریب،خبررساں ایجنسی﴿تنا﴾ کے مطابق، مصر کے وزیر اوقاف محمد مختار جمعہ نے مصر میں ہونے والی کانفرنس کہ جس کا عنوان معاشرے کے قیام میں فتوے کا کردار تھا ، اس کانفرنس میں انھوں نے اس بات کی جانب اشارہ کیا ہے کہ،معاشرے میں قیام امن کے لئے علماء پر بڑی بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔

انھوں کہا ہے کہ،وہ لوگ کہ جو فتوی دینے کی شائستگی نہیں رکھتے،ان غیر عالم افراد کے فتاوں سے انحرافی افکار اور گروہ جنم لیتے ہیں،اہل علم کی ذمہ داری ہے کہ سنجیدگی کے ساتھ اس مشکل کوحل کریں۔

انھوں نے وضاحت کی کہ آج عالم اسلام کا مقابلہ انحرافی اور دہشت تنظیموں سے ہے کہ جنھوں نے فکری،دینی وثقافتی بھونچال پیدا کر دیا ہے لہذا ان کا مقابلہ کیا جائے۔

انھوں نے مزیدکہا ہے کہ ،دہشت گردوں کا کوئی دین مذھب نہیں ہوتا، لہذا اتحاد کے ساتھ اور ایک دوسرے سے تعاون کر کے اس فرقہ ضالہ اور انحرافی افکار کا مقابلہ کیا جائے اور اس میں ثابت قدم رہا جائے۔

انھوں نے علماء کو عوام کی پناہ گاہ قرار دیا اور کہا ہے کہ علماء جدید شرائط کے مطابق فتاویٰ صادر کریں اور حیات بخش امور میں تجدید نظر کریں اگر چہ تجدید گرائی سخت مسئلہ ہے کہ جس میں بہت زیادہ کوشش اور فکر کی ضرورت ہے۔
Share/Save/Bookmark