تاریخ شائع کریں2022 10 August گھنٹہ 15:01
خبر کا کوڈ : 560964

پیغام حسین یہی ہے کہ نہ ظلم برداشت کیا جائے نہ ظلم کیا جائے

ہندو مذہب کے رہنما سوامی سارنگ نے کہاکہ' امام حسینؓ نے آج سے چودہ سو برس قبل جو امن و انصاف ظلم کے خلاف جدوجہد کی تھی امن کے قیام کے لڑائی کی ابتدا کی تھی وہ آج تک پوری دنیا میں نمونہ عمل ہے۔
پیغام حسین یہی ہے کہ نہ ظلم برداشت کیا جائے نہ ظلم کیا جائے
لکھنؤ/ ہندوستان میں عزاداری کا مرکز اترپردیش کے لکھنؤ میں یوم عاشورہ پورے جوش و خروش کے ساتھ منایا جا رہا ہے، اس موقع پر لکھنؤ کے وکٹوریہ اسٹریٹ سے تال کٹورہ کربلا تک جلوس کا طویل سلسلہ رہتا ہے جس میں بلاتفریق مذہب و ملت کے لوگوں شرکت کرتے ہیں اور آپسی بھائی چارہ اتحاد کا پیغام دیتے ہیں۔

لکھنؤ کی تہذیب کی شاندار مثال پیش کرتے ہوئے سوامی سارنگ نے جلوس کے آگے ماتم کرتے ہوئے عظیم پیغام دیا ہے انہوں نے کہاکہ' ہندوستان میں سبھی مذاہب کے رہنے والے آپسی اتحاد کے ساتھ رہ رہے ہیں اور گنگا جمنی تہذیب کے لیے لکھنؤ پوری دنیا میں مشہور ہے۔

اس موقع پر ہندو مذہب کے رہنما سوامی سارنگ نے کہاکہ' امام حسینؓ نے آج سے چودہ سو برس قبل جو امن و انصاف ظلم کے خلاف جدوجہد کی تھی امن کے قیام کے لڑائی کی ابتدا کی تھی وہ آج تک پوری دنیا میں نمونہ عمل ہے۔ انہوں نے کہاکہ جس شخص کے اندر ذرہ برابر بھی انسانیت زندہ ہوگی وہ امام حسینؓ اور کربلا کے جانثاروں کو یاد کرے گا۔ حضرت امام حسین نے امن کا پیغام دیا ہے جو تاقیامت یاد کیا جائے گا۔'

وہیں پر معروف عالم دین مولانا کلب جواد نقوی نے کہا کہ آج یوم عاشور ہے اور اس موقع پر پوری دنیا میں امام حسین کے شیدائی ان کے پیغام کو عام کرنے میں مصروف ہیں، لکھنؤ عزاداری کا مرکز رہا ہے، یہاں سے گنگا جمنی تہذیب کی کرنیں پھوٹتی ہیں، یہی وجہ ہے کہ سبھی مذاہب کے لوگ نہ صرف جلوس میں شامل ہو رہے ہیں، بلکہ یاد حسین میں ماتم کر رہے ہیں، انہوں نے کہاکہ پیغام حسین یہی ہے کہ نہ ظلم برداشت کیا جائے نہ ظلم کیا جائے۔'
http://www.taghribnews.com/vdcjmyeixuqemhz.3lfu.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس