تاریخ شائع کریں2022 3 July گھنٹہ 19:53
خبر کا کوڈ : 556022

شامی فوج نے آج اتوار کو حلب کے شمال میں ایک ترک ڈرون کو مار گرایا

ایرنا کے مطابق شامی خبر رساں ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ اس ترک ڈرون کا مقصد حلب کے شمال میں شامی فوج کی ایک چوکی کو نشانہ بنانا تھا۔
شامی فوج نے آج اتوار کو حلب کے شمال میں ایک ترک ڈرون کو مار گرایا
شامی فوج نے آج اتوار کو حلب کے شمال میں ایک ترک ڈرون کو مار گرایا۔

ایرنا کے مطابق شامی خبر رساں ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ اس ترک ڈرون کا مقصد حلب کے شمال میں شامی فوج کی ایک چوکی کو نشانہ بنانا تھا۔

اس حوالے سے شام کے ایک سکیورٹی ذریعے نے الاخباریہ نیوز چینل کو بتایا کہ فوج نے ترک فوج کے ایک ڈرون کو مار گرایا جو حلب کے نواح میں تل رفعت کے اطراف کے علاقوں میں سے ایک کو نشانہ بنانے کی کوشش کر رہا تھا۔

کل ہفتہ کے روز حلب کے شمال میں شامی فوج کے ٹھکانوں کو ترک فوج کے توپ خانے اور راکٹ حملوں سے نشانہ بنایا گیا۔

سانا نے رپورٹ دی ہے کہ کل شام ترکی نے اپنے راکٹ اور توپ خانے سے حلب کے شمالی مضافات میں سرحدی گاؤں "ماراناز" میں شامی فوج کے ٹھکانے کو نشانہ بنایا۔

المیادین نیوز چینل نے اطلاع دی ہے کہ ترکی کے ان حملوں کے ساتھ ہی حلب کے شمال میں بہت زور دار دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔

گزشتہ روز ترک فوج سے وابستہ کرائے کے عناصر نے رقہ کے شمالی مضافات میں رہائشی علاقوں کو توپ خانے سے نشانہ بنایا۔

مقامی ذرائع نے سانا کے رپورٹر کو بتایا کہ "ترکی کے ساتھ سرحدی پٹی میں تعینات ترک قابض افواج سے تعلق رکھنے والے کرائے کے فوجیوں نے رقہ کے شمالی مضافات میں واقع گاؤں Ayeweh اور بین الاقوامی سڑک M4 کو بھاری توپ خانے سے نشانہ بنایا۔

گزشتہ جمعے کو ترک صدر رجب طیب اردگان نے کہا تھا کہ "ان کے ملک کے حکام شمالی شام میں فوجی آپریشن کے لیے ضروری تیاری اور تیاری کر رہے ہیں۔"

چند روز قبل انہوں نے اعلان کیا تھا کہ "ترکی کی جنوبی سرحدوں کے ساتھ 30 کلومیٹر کے علاقے کو ہمارے لیے سیکیورٹی کا علاقہ تصور کیا جاتا ہے اور ہم نہیں چاہتے کہ اس علاقے میں کوئی ہمیں پریشان کرے، اس لیے ہم نئی کارروائیاں کریں گے"۔
http://www.taghribnews.com/vdcj8mei8uqeiyz.3lfu.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس