تاریخ شائع کریں2022 27 May گھنٹہ 12:51
خبر کا کوڈ : 551133

جنوبی لبنان میں صیہونی حکومت کا ڈرون مار گرایا

لبنانی ذرائع کا کہنا ہے کہ جنوبی لبنان میں عبوری صیہونی حکومت کا ایک ڈرون مار گرایا گیا ہے۔
جنوبی لبنان میں صیہونی حکومت کا ڈرون مار گرایا
لبنانی خبر رساں ذرائع نے لبنان کی سرزمین پر عبوری صیہونی حکومت کے ایک ڈرون کو مار گرائے جانے کی اطلاع دی ہے۔

المنار نیوز نیٹ ورک نے اطلاع دی ہے کہ ڈرون اسکائی لارک تھا جسے جنوبی لبنان کے قصبوں عیتا الشعب اور رمیتا کے درمیان مار گرایا گیا۔

نیٹ ورک نے یہ بھی اطلاع دی ہے کہ صیہونی حکومت نے ڈرون کو دوبارہ حاصل کرنے کی کوشش کی ہے لیکن فی الحال یہ لبنانی فوج کے قبضے میں ہے۔

ابھی تک یہ واضح نہیں ہو سکا کہ ڈرون کیوں گرا اور یہ حادثہ تکنیکی خرابی کے باعث پیش آیا یا اسے نشانہ بنایا گیا۔

اس حوالے سے اسرائیلی فضائیہ کے کمانڈر امیکام نورکین نے گزشتہ اپریل میں اعتراف کیا تھا کہ تل ابیب کو اب "لبنان پر فضائی برتری، کیوں اور کیوں" حاصل نہیں ہے۔

نورکین، جو اسرائیلی فوج کی فضائیہ کے کمانڈر کے طور پر ریٹائر ہو رہے ہیں، نے اعتراف کیا کہ اسرائیل نے تقریباً ایک سال قبل جب اس کے ایک ڈرون کو طیارہ شکن میزائل سے مار گرایا تھا، لبنان پر جاسوسی کی پروازیں کم کر دی تھیں۔

نورکین نے گذشتہ سال 29 اکتوبر کو لبنانی حزب اللہ کی طرف سے صیہونی حکومت کے ڈرون کو مار گرائے جانے کا حوالہ دیا ہے۔ صہیونی فوج کی ترجمان Avikha Adrei نے اس وقت حادثے کی تصدیق کی تھی۔

لبنان میں حزب اللہ نے بھی اسی دن ایک بیان میں اعلان کیا کہ تحریک کی فورسز نے دوپہر 1 بجکر 55 منٹ پر ایک صہیونی ڈرون کو مار گرانے میں کامیابی حاصل کی ہے۔ حزب اللہ نے تصدیق کی ہے کہ اس نے جنوبی لبنان میں یاتر کے علاقے وادی مریمین میں ڈرون کو نشانہ بنایا تھا۔

ایک حالیہ رپورٹ میں، کاہن نیوز نیٹ ورک نے کہا ہے کہ اسرائیل کے لبنان پر جاسوسی پروازیں کم کرنے کے فیصلے نے لبنانی فضائی حدود سے معلومات اکٹھا کرنے کی حکومت کی صلاحیت کو متاثر کیا ہے۔

نورکن فضائیہ کی کمان ٹومر بار کے حوالے کرنے اور اسرائیلی فوج میں اپنی 37 سالہ موجودگی کو ختم کرنے کے لیے تیار ہے۔
http://www.taghribnews.com/vdchxznmx23nmzd.4lt2.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس