تاریخ شائع کریں2021 1 August گھنٹہ 15:49
خبر کا کوڈ : 513651

بھارت میں یکم اگست کو 'مسلم خواتین کے حقوق کے دن' کے طور پر منائے جانے کا اعلان

ہندوستان کے مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت نے یکم اگست دو ہزار انیّس کو ' طلاق ثلاثہ یا بقول انکے طلاق بدعت' کو قانونی جرم قرار دیا تھا۔
بھارت میں یکم اگست کو
ندوستان کی حکومت نے یکم اگست کو 'مسلم خواتین کے حقوق کے دن' کے طور پر منائے جانے کا اعلان کیا ہے۔

ہندوستان کے مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت نے یکم اگست دو ہزار انیّس کو ' طلاق ثلاثہ یا بقول انکے طلاق بدعت' کو قانونی جرم قرار دیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ 'تین طلاق' کو قانونی جرم قرار دئے جانے کے بعد سے تین طلاق کے واقعات بڑے پیمانے پر کم ہوئے ہیں جس کا ملک بھر کی مسلم خواتین نے خیر مقدم کیا ہے۔

ہندوستانی وزیر کا کہنا تھا کہ 'طلاق ثلاثہ' کو قانونی جرم بنا کر حکومت نے مسلم خواتین کی 'خود انحصاری، خود اعتمادی اور عزت نفس کو مضبوط بناتے ہوئے ان کے آئینی، بنیادی جمہوری اور مساوی حقوق کو یقینی بنایا ہے۔

ملک بھر میں مختلف تنظیموں کی جانب سے آج 'مسلم خواتین کے حقوق کا دن' منایا جا رہا ہے۔

مرکزی وزیر برائے بہبودی خواتین و اطفال اسمرتی ایرانی، مختار عباس نقوی اور مرکزی وزیر ماحولیات، جنگلات اور موسمیاتی تبدیلی بھوپندر یادو نئی دہلی میں 'مسلم خواتین کے حقوق کے دن' پر منعقد ہونے والے پروگرام میں شریک ہوں گے۔
http://www.taghribnews.com/vdcamenm649n6i1.zlk4.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس