تاریخ شائع کریں2021 6 January گھنٹہ 21:45
خبر کا کوڈ : 488695

مچھ میں جو کچھ ہوا وہ بدامنی کی انتہاہے

پی ڈی ایم سربراہ نے کہا کہ مچھ میں جو کچھ ہوا وہ بدامنی کی انتہاہے اس کی مذمت کرتے ہیں، حکومت عوام کوتحفظ دینے میں ناکام ہوچکی ہے
مچھ میں جو کچھ ہوا وہ بدامنی کی انتہاہے
مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ مچھ میں جو کچھ ہوا وہ بدامنی کی انتہاہے, عمران خان کی کٹھ پتلی حکومت کو سمندر میں غرق کرکے چھوڑیں گے۔

بنوں میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے سربراہ مولانافضل الرحمان نے کہا کہ پی ڈی ایم کی قیادت نے قوم کو آزادی اورجمہوریت کا راستہ دکھایا ہے، اس وقت پوری قوم عمران خان حکومت کے خلاف متحد ہے اوربغاوت کا اعلان کررہی ہے، ہم غداری کے مقدمات سے نہیں ڈرتے، ملک کے اصل وفادار تو ہم ہیں، ہم مک میں آئین کی بالادستی اورعوام کی حقیقی نمائندہ پارلیمان کاقیام چاہتے ہیں اور عمران خان کی کٹھ پتلی حکومت کو سمندر میں غرق کرکے چھوڑیں گے۔

پی ڈی ایم سربراہ نے کہا کہ مچھ میں جو کچھ ہوا وہ بدامنی کی انتہاہے اس کی مذمت کرتے ہیں، حکومت عوام کوتحفظ دینے میں ناکام ہوچکی ہے، اسلام آباد میں نوجوان کو پولیس نے کیوں مارا ملک میں کوئی حکومت نہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک ڈوب رہا ہے اورعمران خان کہتا ہے کہ یہ ترقی کررہا ہے، لیگی حکومت سی پیک کے تحت 70 ارب کی سرمایہ کاری لائی اور انہیں اسے ناکام بنانے کے لیے لایا گیا، بھارتی وزیراعظم خود گزشتہ دورمیں پاکستان آئے اورتجارت کی بات کی لیکن آج معاملہ الٹ ہے اوریہی صورت حال دیگر مالک  کے حوالے سے بھی ہے، چین ہم سے ناراض اورہماری معیشت تباہ ہوچکی ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ نہ اسرائیل تسلیم کیا جاسکتا ہے نہ ہی قادیانیوں کو کوئی مسلمان بنا سکتاہے، قادیانیوں کی جانب سے غیرملکی فنڈنگ ہوئی لیکن الیکشن کمیشن خاموش ہے، ہم 19 جنوری کو الیکشن کمیشن کے سامنے مظاہرہ کرینگے جب کہ 21 جنوری کو کراچی میں اسرائیل کے خلاف ملین مارچ کریں گے۔
http://www.taghribnews.com/vdcjhoexiuqeomz.3lfu.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس