تاریخ شائع کریں۱۷ تير ۱۳۹۹ گھنٹہ ۱۰:۳۲
خبر کا کوڈ : 468419

نیوزی لینڈ: سانحہ کرائسٹ چرچ/ مجرم کو سزائے موت دینے کی تاریخ کا اعلان

اگر لواحقین کورونا کی وجہ سے 24 اگست تک نیوزی لینڈ نہ پہنچ سکے تو مجرم کی پھانسی کے وقت ویڈیو کانفرنس کے ذریعے لواحقین کی موجودگی کو یقینی بنایا جائے گا
نیوزی لینڈ: سانحہ کرائسٹ چرچ/ مجرم کو سزائے موت دینے کی تاریخ کا اعلان
نیوزی لینڈ کی عدالت نے سانحہ کرائسٹ چرچ کے مجرم کو سزائے موت دینے کی تاریخ کا اعلان کردیا۔ ابلاغ نیوز نے غیر ملکی ذرائع ابلاغ کے حوالے نقل کیا ہے کہ نیوزی لینڈ کے علاقے کرائسٹ چرچ کی دو مساجد میں اندھا دھند فائرنگ کر کے 51 نمازیوں کو شہید کرنے والے شخص کو 24 اگست کو متاثرہ خاندانوں کے سامنے سزائے موت دی جائے گی۔

رپورٹ کے مطابق نیوزی لینڈ کی عدالت عالیہ کے جج جسٹس کیمرون مینڈر نے جمعے کے روز مساجد پر حملے میں ملوث آسٹریلوی شہری برینٹن ٹارنٹ کو سزائے موت سناتے ہوئے پھانسی کی سزا کے لیے 24 اگست کی تاریخ مقرر کی۔ پراسیکیوٹر نے کہا کہ اگر لواحقین کورونا کی وجہ سے 24 اگست تک نیوزی لینڈ نہ پہنچ سکے تو مجرم کی پھانسی کے وقت ویڈیو کانفرنس کے ذریعے لواحقین کی موجودگی کو یقینی بنایا جائے گا۔

یاد رہے کہ سفید فام کی برتری کے قائل 29 سالہ برینٹن ٹیرنٹ نے ابتدا میں تمام مذکورہ الزامات کو مسترد کر دیا تھا۔ تاہم وڈیو کال کے ذریعے منعقد ہونے والے حالیہ سیشن میں اس نے اپنا موقف تبدیل کر دیا۔حالیہ اعتراف کے بعد مقدمے کی کارروائی کی ضرورت باقی نہیں رہی کیوں کہ اب جج کی ذمے داری مجرم کو سزا سنانے تک محدود ہو گئی ہے۔

متعلقہ عدالت کے سربراہ جسٹس کیمرون مینڈیر کا کہنا ہے کہ “یہ اقبالِ جرم فوجداری کے اس مقدمے کے اختتام تک پہنچنے کے ھوالے سے نہایت اہم پیش رفت ہے”۔نیوزی لینڈ کی تاریخ میں یہ اب تک کا سب سے خوفناک حملہ تھا جس نے پوری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا تھا۔
http://www.taghribnews.com/vdcb8wba9rhb0ap.kvur.html
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس