تاریخ شائع کریں۱۳ فروردين ۱۳۹۹ گھنٹہ ۱۹:۲۹
خبر کا کوڈ : 457112

ایران نے کورونا وائرس کا مقابلہ کرکے دنیا کے ترکی یافتہ ممالک کو پیچھے چھوڑ دیا

ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے بدھ کو کابینہ کے اجلاس میں ملک میں کورونا وائرس پھیلنے کا سلسلہ کم ہونے اور مریضوں کی تعداد میں کمی آنے کی جا
ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے بدھ کو کابینہ کے اجلاس میں ملک میں کورونا وائرس پھیلنے کا سلسلہ کم ہونے اور مریضوں کی تعداد میں کمی آنے کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا
ایران  نے کورونا وائرس کا مقابلہ کرکے دنیا کے ترکی یافتہ ممالک کو پیچھے چھوڑ دیا
اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے عوام کی جانب سے سماجی فاصلہ قائم کرنے کے منصوبے میں تعاون کئے جانے کی قدردانی کرتے ہوئے کہا کہ ایران کے تمام صوبوں میں کورونا وائرس میں مبتلاء مریضوں کی تعداد میں کمی آئی ہے جس سے پتہ چلتا ہے کہ کورونا کے خلاف جنگ میں عوام اور طبی عملہ صحیح راستے پر گامزن ہے۔
ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے بدھ کو کابینہ کے اجلاس میں ملک میں کورونا وائرس پھیلنے کا سلسلہ کم ہونے اور مریضوں کی تعداد میں کمی آنے کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ کورونا کی روک تھام میں ایران کے ساتھ دنیا کے پیشرفتہ ممالک کی صورت حال کا موازنہ کرنے سے پتہ چلتا ہے کہ ملت ایران نے دشمنوں کے جھوٹے پروپیگنڈوں اور لن ترانیوں کا منھ توڑ اور بھرپور جواب دیا ہے۔ 
صدر حسن روحانی نے اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ ایران کے پیداواری شعبوں نے ملک کی ضروریات پوری کرنے کے لئے بہت اچھی کوششیں انجام دی ہیں، کہا کہ سرکاری اور پرائیویٹ سیکٹر کی شرکت سے بیماروں اور عوام کے تمام طبقات کے لئے اینٹی سیپٹک مواد اور ماسک جیسی ضرورت کی چیزیں بھرپور طور پر تیار ہو رہی ہیں ۔ 
اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے مزید کہا کہ بڑے بڑے دعوے دار صنعتی ممالک میں میڈیکل ساز و سامان کی کمی ہوگئی ہے جبکہ ایران میں وینٹی لیٹر اور دیگر طبی ساز و سامان بھرپور مقدار میں تیار کر کے مریضوں کو فراہم کئے جا رہے ہیں۔
صدر حسن روحانی نے  کہا کہ کورونا وائرس پھیلنے سے ملت ایران کے ساتھ امریکیوں کی دشمنی طشت از بام ہوگئی ہے ۔ انہوں نے  کہا کہ افسوس کہ امریکیوں نے ان مشکل حالات میں بھی عبرت حاصل نہیں کی جبکہ یہ امریکیوں کے لئے اپنے غلط راستے کو ترک کرنے کا بہترین تاریخی موقع تھا۔ 
اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے ایران کے خلاف غیر قانونی پابندیاں عائد کرنے پر مبنی امریکیوں کی خباثت کا سلسلہ جاری رہنے کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ سخت ترین پابندیوں کے باوجود  بے روزگاری کے مسائل و مشکلات دور کرنے کے لئے تقریبا دس ارب ڈالر مختص کئے گئے ہیں اور امدادی پیکج، بلا سود قرضوں اور معاشی پیکج کی شکل میں دیئے جائیں گے۔ 
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس