تاریخ شائع کریں۲۳ دی ۱۳۹۸ گھنٹہ ۲۳:۳۶
خبر کا کوڈ : 448100

پاکستانی وزیر خارجہ ایران کے دورے کے بعد سعودی عرب پہچ گئے

شاہ محمود قریشی سعودی عرب آمد کے بعد دارالحکومت ریاض میں سعودی دفتر خارجہ پہنچے
خطے کے امن و امان اور استحکام کے لیے ضروری ہے کہ ایران اور امریکا کو مذاکرات پر آمادہ کیا جائے تاکہ معاملات افہام و تفہیم کے ساتھ پرامن انداز میں طے پا سکیں۔
پاکستانی وزیر خارجہ ایران کے دورے کے بعد سعودی عرب پہچ گئے
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ خطے کے امن و امان اور استحکام کے لیے ضروری ہے کہ ایران اور امریکا کو مذاکرات پر آمادہ کیا جائے تاکہ معاملات افہام و تفہیم کے ساتھ پرامن انداز میں طے پا سکیں۔
شاہ محمود قریشی سعودی عرب آمد کے بعد دارالحکومت ریاض میں سعودی دفتر خارجہ پہنچے جہاں سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان السعود نے ان کا پرتپاک خیرمقدم کیا۔
وزیر خارجہ نے اپنے سعودی ہم منصب شہزادہ فیصل بن فرحان السعود سے ملاقات کی جس میں مشرق وسطیٰ میں پائی جانے والی کشیدگی اور خطے میں امن و امان کی صورتحال سمیت باہمی دلچسپی کے اہم علاقائی و عالمی امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔
شاہ محمود قریشی نے کہا کہ خطے میں پائی جانے والی کشیدگی باعث تشویش ہے، اس کشیدہ صورتحال کو اعتدال پر لانے اور خطے کے امن و استحکام کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے ضروری ہے کہ معاملات کو سفارتی ذرائع بروئے کار لا کر پرامن طریقے سے حل کرنے پر زور دیا جائے۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان کی کوشش یہی ہے کہ تمام فریقین کو صبر و تحمل کا مظاہرہ کرنے اور تنازعات کے حل کے لیے مذاکرات اور گفت و شنید کا راستہ اپنانے پر آمادہ کیا جائے۔
ان کا کہنا تھا کہ ہمیں تشویش ہے کہ اگر اس آگ کو ٹھنڈا کرنے کے لیے بروقت اقدام نہ اٹھائے گئے تو یہ پورے خطے کو اپنی لپیٹ میں لے سکتی ہے۔
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کشیدہ صورتحال پر قابو پانے کے لیے خطے کے دیگر وزرائے خارجہ سے ہونے والے روابط سے بھی سعودی ہم منصب کو آگاہ کیا۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس