تاریخ شائع کریں۱۷ آذر ۱۳۹۸ گھنٹہ ۲۰:۰۲
خبر کا کوڈ : 444584

عبداللہ عبداللہ اور گلبدین حکمتیار کے حامیوں کا الیکشن میں دھاندلی کا الزام

افغانستان کے صدارتی امیدوار عبداللہ عبداللہ کے حامیوں نے ہرات اور سمنگان صوبوں میں مظاہرے کئے ہیں
افغان خبر رساں ایجنسی آوا نے خبردی ہے کہ مظاہرے کے شرکا نے تین لاکھ مشتبہ ووٹوں کو کالعدم قرار دئے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔ مظاہرین نے حکومت اور افغانستان کے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ وہ قانون کے مطابق عمل اور عوام کے ووٹوں کا احترام کرے
عبداللہ عبداللہ اور  گلبدین حکمتیار کے حامیوں کا الیکشن میں دھاندلی کا الزام
افغانستان کے صدارتی امیدوار عبداللہ عبداللہ کے حامیوں نے ہرات اور سمنگان صوبوں میں مظاہرے کئے ہیں۔
افغان خبر رساں ایجنسی آوا نے خبردی ہے کہ مظاہرے کے شرکا نے تین لاکھ مشتبہ ووٹوں کو کالعدم قرار دئے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔ مظاہرین نے حکومت اور افغانستان کے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا کہ وہ قانون کے مطابق عمل اور عوام کے ووٹوں کا احترام کرے۔ ایک اور صدارتی امیدوار گلبدین حکمتیار کے حامیوں نے بھی جمعہ کو کابل میں الیکشن کمیشن کے دفتر کے باہر اجتماع کیا تھا۔ افغانستان میں صدارتی انتخابات گذشتہ اٹھائیس ستمبر کو ہوئے تھے اور اس کے ابتدائی نتائج کے اعلان کو اب تک ووٹوں کی گنتی میں فنی خرابی کے  باعث تین بارملتوی کیاجاچکا ہے۔ ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا عمل افغانستان کے ستائیس صوبوں میں مکمل ہوگیا ہے لیکن سات صوبوں میں بعض امیدواروں کے اعتراضات کی وجہ سے مکمل نہیں ہوسکا ہے۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس