تاریخ شائع کریں۲۷ مهر ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۹:۵۲
خبر کا کوڈ : 440424

مولانا فضل الرحمن کی شدت پسند تنظیم پر پابندی لگنے کا خدشہ

پاکستانی حکومت نے جمعیت علمائے اسلام (ف) کی ذیلی تنظیم انصار الاسلام کوکالعدم قرار دینے کا فیصلہ کر لیا ہے
پاکستانی حکومت نے جمعیت علمائے اسلام (ف) کی ذیلی تنظیم انصار الاسلام کوکالعدم قرار دینے کا فیصلہ کر لیا ہے
مولانا فضل الرحمن کی شدت پسند تنظیم پر پابندی لگنے کا خدشہ
پاکستانی حکومت نے جمعیت علمائے اسلام (ف) کی ذیلی تنظیم انصار الاسلام کوکالعدم قرار دینے کا فیصلہ کر لیا ہے۔
بین الاقوامی خبررساں ایجنسی نے ایکس پریس کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پاکستانی حکومت نے جمعیت علمائے اسلام (ف) کی ذیلی تنظیم انصار الاسلام کوکالعدم قرار دینے کا فیصلہ کر لیا ہے۔
ذرائع کے مطابق پاکستانی وزارتِ داخلہ نے جمعیت علمائے اسلام ف کی ذیلی تنظیم انصار الاسلام کوکالعدم قرار دینے کے لیے سمری وزارتِ قانون اور الیکشن کمیشن کو ارسال کر دی ہے۔
وزارتِ قانون اور الیکشن کمیشن کو بھیجی گئی سمری میں کہا گیا ہے کہ جے یو آئی ف کی ذیلی تنظیم انصار الاسلام لٹھ بردار ہے، قانون اس کی اجازت نہیں دیتا۔وزارت داخلہ کی جانب سے ارسال کی گئی سمری میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ قانون میں کسی بھی قسم کی مسلح ملیشیا کی اجازت نہیں ہے۔
ذرائع کے مطابق جے یو آئی ف میں شامل تنظیم انصار الاسلام پارٹی منشور کی شق نمبر 26 کے تحت الیکشن کمیشن آف پاکستان میں رجسٹرڈ ہے۔
واضح رہے کہ کچھ روز قبل ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں سربراہ جمعیت علمائے اسلام ف مولانا فضل الرحمن باوردی محافظ دستے سے سلامی لیتے دکھائی دے رہے ہیں۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس