تاریخ شائع کریں۲۴ مهر ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۹:۵۶
خبر کا کوڈ : 440252

ایرانی آئیل ٹینکر پر حملہ علاقے میں کشیدگی میں اضافہ کرنے کی کوشش ہے

ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سکریٹری جنرل نے کہا ہے
ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ بحیرہ احمر میں جس نے بھی ایرانی آئیل ٹینکر پر حملہ کرکے علاقے میں کشیدگی کی نئی فضا قائم کرنے کی کوشش کی ہے
ایرانی آئیل ٹینکر پر حملہ علاقے میں کشیدگی میں اضافہ کرنے کی کوشش ہے
ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ بحیرہ احمر میں جس نے بھی ایرانی آئیل ٹینکر پر حملہ کرکے علاقے میں کشیدگی کی نئی فضا قائم کرنے کی کوشش کی ہے اس کو اسلامی جمہوریہ ایران منہ توڑ جواب دے گا
ایران کے آئیل ٹینکر سابیتی کو گذشتہ جمعے کو سعودی عرب کی جدہ بندرگاہ کے قریب بحیرہ احمر کی گذرگاہ میں کم سے کم دو راکٹوں سے نشانہ بنایا گیا - آدھے گھنٹے کے وقفے سے ایرانی آئیل ٹینکر پر دوبار حملہ کیا گیا - اس حملے کے ردعمل میں ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سکریٹری علی شمخانی نے بدھ کو تہران میں شام کے امور میں روسی صدر کے خصوصی نمائندے سے ملاقات میں داعش کو دوبارہ تقویت پہنچانے اور مغربی ایشیا میں بدامنی کو ہوا دینے کی امریکا کی ناپاک سازشوں کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ علاقے کے ممالک اس طرح کے اقدامات کا مقابلہ کرنے کے لئے جن سے علاقے میں عدم استحکام پیدا ہو رہا ہو، ذمہ داری اور ہوشیاری کا مظاہرہ کریں - ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سکریٹری نے کہا کہ علاقے میں کسی بھی طرح کی جنگ و جارحیت، امریکا اور صیہونی حکومت کی پالیسیوں کو آگے بڑھانے میں مدد دے گی کیونکہ یہ حکومتیں خطے میں بدامنی اور بحران پیدا کرنے کی مسلسل کوشش کررہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب ان ملکوں کے عوام جو برسوں سے جنگ و خونریزی کا شکار رہے ہیں مزید بحران اور بدامنی کو تحمل کرنے کی توانائی نہیں رکھتے - شام کے امور میں روسی صدر کے خصوصی نمائندے الیکزنڈر لاورتینوف نے بھی اس ملاقات میں شمالی شام کی تازہ ترین صورتحال سے باخبر کرتے ہوئے کہا کہ تہران اور ماسکو کے مابین تعاون علاقے میں امن و استحکام کی تقویت میں مدد گار ثابت ہوسکتا ہے -
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس