تاریخ شائع کریں۱۹ مهر ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۴:۵۷
خبر کا کوڈ : 439718

آئیل ٹینکر کے عملے کو نقصان نہیں پہنچا نہ ہی اسکے ڈوبنے کا امکان ہے

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے بحیرہ احمر میں ایرانی آئل ٹینکر پر ہونے والے حملے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا
ایرائی آئل ٹینکر کو جمعے کی صبح مشرقی بحیرہ احمر سے گذرتے ہوئے نہایت قریب سے تقریبا آدھے گھنٹوں کے اندر دوبار نشانہ بنایا گیا
آئیل ٹینکر کے عملے کو نقصان نہیں پہنچا نہ ہی اسکے ڈوبنے کا امکان ہے
ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے بحیرہ احمر میں ایرانی آئل ٹینکر پر ہونے والے حملے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس حملے سے ماحولیات کو پہنچنے والے شدید نقصانات کی پوری ذمہ داری اس خطرناک مہم جوئی کے عوامل پر عائد ہوتی ہے
اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان سید عباس موسوی نے کہا کہ ایران کی قومی تیل کمپنی کی تحقیقات سے پتہ چلا ہے کہ ایرائی آئل ٹینکر کو جمعے کی صبح مشرقی بحیرہ احمر سے گذرتے ہوئے نہایت قریب سے تقریبا آدھے گھنٹوں کے اندر دوبار نشانہ بنایا گیا اور اسے نقصان پہنچا ہے۔ موسوی نے حالات کے پوری طرح کنٹرول ہونے کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ خوش قسمتی سے آئیل ٹینکر کے عملے کو کوئی نقصان نہیں پہنچا ہے اور اس کے ڈوبنے کا کوئی خطرہ نہیں ہے ۔ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ چند مہینے پہلے بھی بحیرہ احمر میں ایرانی آئل ٹینکر کو اسی طرح کے تخربی اقدامات کا نشانہ بنایا گیا تھا جس میں ملوث عناصر کے بارے میں تحقیقات جاری ہیں۔ سید عباس موسوی نے اس آئل ٹینکر سے رسنے والے تیل کی وجہ سے ماحولیات کو پہنچنے والے نقصانات پر تشویش ظاہر کرتے ہوئےکہا کہ اس خطرناک اقدامات کے عوامل اوراس کی  تفصیلات کا جائزہ لیا جا رہا ہے اور نتیجے کا اعلان کیا جائےگا۔  
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس