تاریخ شائع کریں۱۸ مهر ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۴:۱۰
خبر کا کوڈ : 439660

تاجروں کا اسلام آباد کے ریڈ زون میں داخلے کی کوشش پر پولیس کا لاٹھی چارج

اسلام آباد کے ریڈ زون میں داخلے کی کوشش پر پولیس اور تاجروں میں جھڑپ ہوئی ہے
اسلام آباد کے ریڈ زون میں داخلے کی کوشش پر پولیس اور تاجروں میں جھڑپ ہوئی ہے
تاجروں کا اسلام آباد کے ریڈ زون میں داخلے کی کوشش پر پولیس کا لاٹھی چارج
اسلام آباد کے ریڈ زون میں داخلے کی کوشش پر پولیس اور تاجروں میں جھڑپ ہوئی ہے۔
پاکستانی میڈیا کے مطابق ملک بھر سےآنے والے تاجروں کی  بڑی تعداد ریلی کی صورت میں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے ریڈ زون میں داخلے کی کوشش پرپولیس نے تاجروں پر لاٹھی چارج کی جس کے جواب میں مظاہرین نے اہلکاروں پر پتھراؤ شروع کردیا تاہم مظاہرین نے خاردار تاریں اور تمام رکاوٹیں ہٹا دیں اور حکومت کی معاشی پالیسیوں کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔
 ریڈ زون میں داخل ہونے کی کوشش کے دوران پولیس اور مظاہرین آمنے سامنے آگئے جب کہ پولیس نے مظاہرین پر لاٹھی چارج شروع کردی جس کے جواب میں مظاہرین نے پولیس پر پتھراؤ شروع کردیا، صورتحال مزید بگڑنے پر پولیس کی اضافی نفری کو بھی طلب کرلیا گیا۔
تاجر نادرا چوک پر دھرنا دے کر بیٹھ  گئے جس کے بعد ایف بی آر کی ٹیم اور تاجر عہدیداروں کے درمیان مذاکرات ہوئے جو ایک گھنٹہ جاری رہنے کے باوجود بے نتیجہ ثابت ہوئے۔
مذاکرات ناکام ہونے کے بعد تاجر نمائندہ وفد دھرنے میں لوٹ آیا اور آئندہ کا لائحہ عمل کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ قیادت نے فیصلہ کر لیا ہے کہ شناختی کارڈ کی شرط نہیں مانتے اور حکومت کی جو مرضی ہو کرے ہم شناختی کارڈ نہیں دیں گے، 28 اور 29 اکتوبر پورے ملک میں شٹر ڈاوٴن کیا جائے گا جب کہ 15 اکتوبر سے روزانہ ایک گھنٹے کی ہڑتال کی جائے گی۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس