تاریخ شائع کریں۱۶ مهر ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۷:۱۰
خبر کا کوڈ : 439508

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے گرد گھیرا تنگ، مواخذے سے نہیں بچ سکتے

قرائن و شواہد سے پتہ چلتا ہے کہ امریکی صدر مواخذے سے نہیں بچ سکتے
امریکی صدر ٹرمپ کے خصوصی معاون برائے یوکرائن  کُرٹ ڈی وولکر نے امریکی صدر کی جولائی میں کی گئی اس گفتگو کو مشکوک اور غیر معمولی قرار دیتے ہوئے کہا
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے گرد گھیرا تنگ، مواخذے سے نہیں بچ سکتے
قرائن و شواہد سے پتہ چلتا ہے کہ امریکی صدر مواخذے سے نہیں بچ سکتے۔
بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر ٹرمپ کے خصوصی معاون برائے یوکرائن  کُرٹ ڈی وولکر نے امریکی صدر کی جولائی میں کی گئی اس گفتگو کو مشکوک اور غیر معمولی قرار دیتے ہوئے اٹارنی جنرل کو شکایت درج کرائی تھی جس میں امریکی صدر کے ایک مشکوک وعدے کی تکمیل کا ذکر کیا گیا تھا۔ اب ایک اور اطلاع دہندہ نے حکام سے رابطہ کرلیا ہے۔
مذکورہ شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے تاہم اُن کے وکیل کا کہنا ہے کہ ان کا موکل امریکی انٹیلیجنس کا ایک اہلکار ہے اور ان کے پاس صدر ٹرمپ کی یوکرائنی ہم منصب سے گفتگوکے بارے میں براہ راست معلومات ہیں تاہم یہ معلومات صرف متعلقہ حکام کو ہی فراہم کی جائیں گی۔
واضح رہے کہ امریکی صدر ٹرمپ نے یوکرائنی صدر زیلنسکی سے خفیہ ٹیلی فونک گفتگو میں آئندہ صدارتی الیکشن میں اپنے مخالف امیدوار اور سیاسی حریف جوئے بائیڈن کیخلاف تحقیقات شروع کرنے کے لیے دباؤ ڈالا تھا اور یوکرائن کو فوجی امداد کی مد میں دی جانے والی رقم کو جوئے بائیڈن کیخلاف تحقیقات سے مشروط کردیا تھا۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس