تاریخ شائع کریں۱۵ مهر ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۸:۰۰
خبر کا کوڈ : 439397

امریکی ایوان کے نمائندگان اور اسپیکر غدار ہیں

ایوان نمائندگان کی انٹیلی جینس کمیٹی کے چیف ایڈم شیف نے یوکرین گیٹ کے بارے میں کہا ہے
امریکی صدر ٹرمپ نے یوکرین گیٹ کے تعلق سے اپنے خلاف تحریک مواخذہ پر تازہ ترین ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ایوان نمائندگان کی اسپیکر کو غدار قرار دیا ہے
امریکی ایوان کے نمائندگان اور اسپیکر غدار ہیں
امریکی صدر ٹرمپ نے یوکرین گیٹ کے تعلق سے اپنے خلاف تحریک مواخذہ پر تازہ ترین ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ایوان نمائندگان کی اسپیکر کو غدار قرار دیا ہے
امریکی صدر ٹرمپ نے اپنے ٹویٹ میں لکھا کہ ممکن ہے کہ امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر ننسی پلوسی اس بنیاد پر جو ایوان نمائندگان کی انٹیلی جینس کمیٹی کے چیف ایڈم شیف نے یوکرین گیٹ کے بارے میں کہا ہے خائن اور مجرم ہوں۔ ٹرمپ نے کہا کہ پلوسی ان تمام جھوٹی باتوں کو اچھی طرح سمجھتی ہیں جو ایڈم شیف نے امریکی کانگریس اور عوام سے کہا ہے۔اس سے پہلے بھی امریکی صدر ٹرمپ ایڈم شیف پر جنھوں یوکرین گیٹ کی تحقیقات میں اہم کردار ادا کیا ہے غداری اور خیانت کا الزام عائد کرتے ہوئے ان کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے - امریکی انٹیلی جینس کے ایک افسر نے انکشاف کیا ہے کہ ٹرمپ نےگذشتہ پچیس جولائی کو یوکرین کے صدر سے ٹیلی فونی گفتگو میں ان سے کہا تھا کہ وہ انہیں ایسی خفیہ اطلاعات فراہم کریں کہ جنھیں وہ دوہزار بیس کے صدارتی انتخابات کے امیدوار اور اپنے حریف جو بایڈن کے خلاف استعمال کرسکیں ۔ اس ٹیلی فونی مکالمے کا راز فاش ہونے کے بعد امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر ننسی پلوسی نے گذشتہ چوبیس ستمبر کو ٹرمپ کے خلاف تحریک مواخذہ کی تحقیقات شروع کرنے کا حکم دیا ۔ ننسی پلوسی کا کہنا تھا کہ ٹرمپ کے اقدامات نے امریکا کے انتخابات کے پورے عمل اور قومی سلامتی کو خطرے سے دو چار کردیا ہے۔ٹرمپ کے خلاف تحریک مواخذہ کی تحقیقات کا عمل شروع ہوتے ہی ایوان نمائندگان کے دو سوپچیس ارکان نے تحریک مواخذہ کی حمایت کردی ہے ۔اور اب ٹرمپ کی تحریک مواخذہ کا معاملہ انتہائی سنگین صورت اختیار کرتا جارہاہے اور اس بار ٹرمپ دوہزار سولہ کے صدارتی انتخابات میں روس کے ساتھ اپنی انتخابی ٹیم کے تعاون کے معاملے کی طرح آسانی سے نہیں بچ سکیں گے - ڈیموکریٹس کی ایوان نمائندگان میں اکثریت ہے اور دوہزار انیس میں جب سے انہیں ایوان میں اکثریت ملی ہے انہوں نے ٹرمپ پر اپنا دباؤ بڑھا دیا ہے تاکہ وہ ٹرمپ کو میدان سیاست سے باہر نکال سکیں اس پوری صورتحال کے پیش نظر یہ کہا جاسکتا ہے کہ ایوان نمائندگان میں ٹرمپ کے خلاف تحریک مواخذہ منظور کرلی جائے گی اور اس کے بعد سینیٹ میں ان کی قسمت کا فیصلہ ہوگا اگرچہ یہ کہا جارہا ہےکہ سینیٹ میں ریپبلیکن کی اکثریت کی وجہ سے ٹرمپ کے خلاف تحریک مواخذہ کو منظوری نہیں مل سکے گی لیکن پچھلے چند روز سے کچھ ریپبلیکن ارکان نے بھی ٹرمپ کے خلاف تنقیدیں شروع کردی ہیں جس کی وجہ سے سینیٹ میں بھی ٹرمپ کے لئے مشکلات پیدا ہوسکتی ہیں
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس