تاریخ شائع کریں۲۳ شهريور ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۴:۳۵
خبر کا کوڈ : 437168

جان بولٹن طالبان کے ساتھ امن معاہدے کے مخالف تھے

امریکہ کے مشیرقومی سلامتی جان بولٹن کی برطرفی کا مطلب ہے
امریکی جنگ میں پاکستان کو نقصان ہونے کے باوجود امریکا اور طالبان کے مابین مذاکرات کی بحالی کیلئے پاکستان سرگرم ہو گیا ہے۔
جان بولٹن طالبان کے ساتھ امن معاہدے کے مخالف تھے
امریکی جنگ میں پاکستان کو نقصان ہونے کے باوجود امریکا اور طالبان کے مابین مذاکرات کی بحالی کیلئے پاکستان سرگرم ہو گیا ہے۔
پاکستانی میڈیا کے مطابق پاکستان اس ضمن میں تمام اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ رابطے میں ہے۔اس لئے کہ امریکہ کے مشیرقومی سلامتی جان بولٹن کی برطرفی کا مطلب ہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ اب بھی افغان امن معاہدے کے خواہشمند ہیں۔ جان بولٹن طالبان کے ساتھ امن معاہدے کے مخالف تھے۔
ذرائع کے مطابق فریقین ایک امن معاہدے کے مسودے پر پہلےہی پہنچ چکے ہیں تاہم کابل میں حالیہ بم دھماکے کے بعد جس میں ایک امریکی دہشتگرد فوجی بھی مارا گیا تھا امریکی صدر ٹرمپ نے ٹویٹر پر ایک بیان میں طالبان کے ساتھ کیمپ ڈیوڈ مذاکرات ختم کرنے کا اعلان کیا تھا۔ پاکستان جو اب تک ہونے والے مذاکرات کے 9 ادوار میں سہولت کار کا کردار ادا کرتا رہا تھا ان مذاکرات کے تعطل پر فکرمند ہے۔
واضح رہے کہ دو روز قبل  پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ ماضی میں پاکستان بلاوجہ امریکی جنگ میں کود گیا تھا جس سے پاکستان کو کافی نقصان ہوا۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس