تاریخ شائع کریں۲۵ مرداد ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۶:۳۳
خبر کا کوڈ : 434297

قم المقدس میں بھارتی جارحیت کے خلاف احتجاجی مظاہرے

کشمیر کے تشخص سے کھلواڑ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔قم المقدس میں عوام کا بھارتی جارحیت کے خلاف مظاہرے۔ ​​​​​​​
ایران کے مقدس شہر قم میں ایک عظیم الشان ریلی کا اہتمام کیا گیا جس میں بھارتی جارحیت کی شدید مذمت کی گئی۔ ریلی کے شرکاء نے بھارت مردہ باد اور مودی سرکار کے خلاف نعرے لگائے
قم المقدس میں بھارتی جارحیت کے خلاف احتجاجی مظاہرے
کشمیر کے تشخص سے کھلواڑ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔قم المقدس میں عوام کا بھارتی جارحیت کے خلاف مظاہرے۔

ایران کے مقدس شہر قم میں ایک عظیم الشان ریلی کا اہتمام کیا گیا جس میں بھارتی جارحیت کی شدید مذمت کی گئی۔ ریلی کے شرکاء نے بھارت مردہ باد اور مودی سرکار کے خلاف نعرے لگائے۔

قم کی القدس مسجد سے نکلنی والی اس ریلی میں کشمیری طلبہ کے ساتھ ساتھ ایرانی عوام کی بڑی تعداد نے شرکت کی ۔ ریلی کے شرکاء نے کشمیر میں بھارتی مظالم پر تشویش کا اظہار کیا اور عالمی برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ اس مسلہ کے حل کے لئے اپنا مثبت کردار ادا کرے۔ شرکاء کا کہنا تھا کہ جس طرح کشمیر کی ھویت اور تشخص کو مٹانے کی کوشش ہورہی ہے اس کو کشمیری کی صورت قبول نہیں کرسکتے ہیں ۔
ریلی سے خطاب کرتے ہوئے طلبہ راہنماؤں نے بھارت کو خبردار کیا کہ وہ آگ کے ساتھ کھیلنے سے باز رہے ۔ کشمیری اپنا سب کچھ قربان کردیں گے لیکن کشمیر کی ھویت اور تشخص پر آنچ آنے کی اجازت نہیں دیں گے ۔
مقررین کا کہنا تھا کہ مودی سرکار ایک فاشسٹ حکومت ہے اور اس نے کشمیریوں کی نسل کشی کا منصوبہ بنایا ہوا ہے ۔ آرٹیکل ۳۷۰ کو ہٹا دینا اس منصوبے کی پہلی کڑی ہے ۔ دوسرے مرحلے میں اقتصادی محاصرے، کرفیو اور خوف و دہشت کے ذریعہ کشمیری عوام کو جھکنے پر مجبور کیا جارہا ہے ۔ اگلے مرحلے میں لوگوں کا قتل عام، اجتماعی عصمت دری اور جلاو گھیراو کے ذریعہ کشمیری مقاومت کو توڑنے کی کوشش کی جائے گی ۔ آگے چل کر کشمیر کی آبادی کے تناسب کو تبدیل کردیا جائے گا اور اس مسلم اکثریتی ریاست کو ہندو اکثریتی صوبے میں تبدیل کر دیا جائے گا ۔ 
مقررین کا کہنا تھا کہ بھارت اور مودی سرکار احمقوں کی دنیا سے باہر آجائے اور نوشتہ دیوار پڑھ لے۔ کشمیری عوام بھارت سے نفرت کرتی ہے مودی سرکار کے شیطانی منصوبوں کو خاک میں ملا دے گی۔ 
مقررین نے عالمی برادری اور انسانی حقوق کے اداروں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طور پر کشمیریوں کی حمایت میں آگے آجائیں اور بہتر سالوں سے حل طلب مسئلہ کو کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حل کرنے کےلیے اپنا کردار ادا کرے ۔ 
یاد رہے بھارت میں مودی سرکار نے کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرکے خطے کو آتش فشاں کے دھانے پر لاکر کھڑا کردیا ہے۔ اگر مسلہ کشمیر کا فوری حل تلاش نہ کیا گیا تو یہ پورے خطے کو جنگ اور نا امنی کی جانب دھکیل دے گا۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس