تاریخ شائع کریں۲۷ تير ۱۳۹۸ گھنٹہ ۲۳:۵۵
خبر کا کوڈ : 430216

سعودی عرب کی جیلوں میں ٹارچر میں خوفناک حد تک اضافہ

سعودی کی سیکورٹی جیلوں میں بند بائیس قیدی ایسے بھی ہیں جنکی شہریت معلوم نہیں
سعودی کی وزارت داخلہ نے ایک ہزار سے زائد غیر ملکیوں کو سیکورٹی معاملات کے بہانے گرفتار کرکے جیلوں میں بند کرنے کا اعتراف کیا ہے
سعودی عرب کی جیلوں میں ٹارچر میں خوفناک حد تک اضافہ
سعودی کی وزارت داخلہ نے ایک ہزار سے زائد غیر ملکیوں کو سیکورٹی معاملات کے بہانے گرفتار کرکے جیلوں میں بند کرنے کا اعتراف کیا ہے۔
روزنامہ الوطن کے مطابق وزارت داخلہ کی جاری کردہ فہرست سے نشاندہی ہوتی ہے کہ سلامتی کے بہانے مختلف جیلوں میں بند چار ہزار دو سو ایک قیدیوں میں ایک ہزار اٹھائیس غیر ملکی بھی شامل ہیں۔ رپورٹ کے مطابق سلامتی کے نام پر آل سعودی کی سیکورٹی جیلوں میں بند بائیس قیدی ایسے بھی ہیں جنکی شہریت معلوم نہیں ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سعودی جیلوں میں سلامتی کی آڑ بند غیر ملکیوں میں زیاد تعداد یمنیوں کی ہے۔ سعودی عرب میں سلامتی سے متعلق جرائم کی کوئی واضح تعریف موجود نہیں ہے۔ انسانی حقوق کی تنطیموں کا کہنا ہے سعودی عرب میں حکومت پر تنقید اور اعتراض کرنے والے ہزاروں افراد کو سلامتی کے خلاف کام کرنے کے الزام میں گرفتار کرکے جیلوں میں بند کردیا گیا ہے۔رپورٹوں کے مطابق محمد بن سلمان کے اقتدار میں آنے کے بعد سے سلامتی کو نقصان پہنچانے اور دہشت گردی جیسے الزام میں گرفتار ہونے والوں کی تعداد اور جیلوں میں ایذارسانی کے واقعات میں وحشتناک حد تک اضافہ ہوا ہے۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس