تاریخ شائع کریں۲۵ تير ۱۳۹۸ گھنٹہ ۲۲:۰۱
خبر کا کوڈ : 429975

معاہدے کی خلاف ورزی پرر ماسکو کو نیٹو کے سخت ردعمل کا سامنا کرنا پڑے گا

نیٹو کے سیکریٹری جنرل نے پیر کے روز روس سے آئی این ایف معاہدے کے بارے میں کہا
جینز اسٹولٹن برگ نے کا کہنا تھا کہ اگر روس نے انٹر میڈیٹ رینیج نیوکلیئر فورس ٹریٹی سے علیحدگی اختیار کی تو نیٹو ٹھوس اقدامات انجام دینے پر مجبور ہو گا
معاہدے کی خلاف ورزی پرر ماسکو کو نیٹو کے سخت ردعمل کا سامنا کرنا پڑے گا
نیٹو کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ آئی این ایف معاہدے سے روس کی علیحدگی کی صورت میں ماسکو کو تنظیم کے سخت ردعمل کا سامنا کرنا پڑے گا۔
جینز اسٹولٹن برگ نے کا کہنا تھا کہ اگر روس نے انٹر میڈیٹ رینیج نیوکلیئر فورس ٹریٹی سے علیحدگی اختیار کی تو نیٹو ٹھوس اقدامات انجام دینے پر مجبور ہو گا۔
نیٹو کے سیکریٹری جنرل نے پیر کے روز روس سے آئی این ایف معاہدے کے بارے میں باقی ماندہ مدت کے دوران مذاکرات کی اپیل کی تھی۔
انھوں نے کہا تھا کہ ہمارے پاس دو اگست سے پہلے پہلے اس بات کا موقع ہے کہ یورپ کی سلامتی کے تحفظ کے لیے اہم قدم اٹھائے جائیں۔
امریکہ کی جانب سے آئی این ایف معاہدے کو معطل کیے جانے کے بعد روس نے اعلان کیا تھا کہ وہ بھی اس معاہدے کے بارے میں ایسا ہی فیصلہ کرنے والا ہے۔
امریکہ نے عالمی معاہدوں سے علیحدگی کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے روس کے ساتھ ہونے والے آئی این ایف معاہدے سے بھی علیحدگی کا فیصلہ کیا ہے۔
اگرچہ امریکہ نے یہ دعوی کرتے ہوئے آئی این ایف معاہدے سے علیحدگی اختیار کرنے کا اعلان کیا ہے کہ روس، معاہدے کا پابندی نہیں کر رہا لیکن سیاسی مبصرین کا خیال ہے کہ امریکہ کے اس اقدام کا مقصد چین کے میزائل پروگرام کا مقابلہ کرنا ہے۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس