تاریخ شائع کریں۵ ارديبهشت ۱۳۹۸ گھنٹہ ۱۷:۱۲
خبر کا کوڈ : 416861

خطے میں دہشت گردی اور انتہا پسندی امریکی مداخلت کا نتیجہ ہے

ایران کے وزیر دفاع نے جمعرات کے روز ماسکو سیکورٹی کانفرنس کے موقع کہا
ایران کے وزیر دفاع جنرل امیر حاتمی نے دہشت گردی اور انتہا پسندی کو جنوبی اور مغربی ایشیا کے لئے بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا
خطے میں دہشت گردی اور انتہا پسندی امریکی مداخلت کا نتیجہ ہے
ایران کے وزیر دفاع جنرل امیر حاتمی نے دہشت گردی اور انتہا پسندی کو جنوبی اور مغربی ایشیا کے لئے بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے علاقے کے تمام خیرخواہ ملکوں منجملہ ازبکستان کے ساتھ تعاون کے لئے ایران کی آمادگی کا اعلان کیا۔
ایران کے وزیر دفاع نے جمعرات کے روز ماسکو سیکورٹی کانفرنس کے موقع پر ازبکستان کے وزیر دفاع جنرل بہادر قربان اوف سے ملاقات میں دہشت گردی اور انتہا پسندی کو علاقے میں امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی مداخلت کے دو نتائج سے تعبیر کیا۔
انھوں نے ایران اور ازبکستان کے گہرے تاریخی و ثقافتی رشتوں کا ذکر کرتے ہوئے مختلف شعبوں منجملہ سیکورٹی و دفاعی شعبوں میں تعاون کی توسیع کی ضرورت پر تاکید کی۔
اس ملاقات میں ازبکستان کے وزیر دفاع بہادر قربان اف نے بھی سیاسی، اقتصادی اور ثقافتی شعبوں میں دو طرفہ تعاون کے زیادہ سے زیادہ فروغ کے لئے دونوں ملکوں کے رہنماؤں کے عزم کو مناسب ذریعہ قرار دیا اور کہا کہ امید کی جاتی ہے کہ دہشت گردی کے خلاف مشترکہ مہم سے متعلق تہران تاشقند تعاون، ماضی سے بھی زیادہ فروغ پائے گا۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس