تاریخ شائع کریں۲۶ بهمن ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۷:۳۲
خبر کا کوڈ : 402454

برطانیوی پارلیمنٹ میں بریگزیٹ بل پر تنازعہ برقرار

برطانیہ کے نکلنے سے متعلق مذاکرات کو جاری رکھنے کے حکومتی بل کے خلاف ووٹ دیا ہے
برطانوی پارلیمنٹ دارالعوام نے یورپی یونین سے برطانیہ کے نکلنے سے متعلق مذاکرات کو جاری رکھنے کے حکومتی بل کے خلاف ووٹ دیا ہے۔
برطانیوی پارلیمنٹ میں بریگزیٹ بل پر تنازعہ برقرار
برطانوی پارلیمنٹ دارالعوام نے یورپی یونین سے برطانیہ کے نکلنے سے متعلق مذاکرات کو جاری رکھنے کے حکومتی بل کے خلاف ووٹ دیا ہے۔

دارالعوام میں ووٹنگ کے دوران حکومتی بل کے خلاف تین سو تین ارکان نے ووٹ دیئے جبکہ حق میں دو سو اٹھاون ووٹ ملے۔

اس طرح برطانوی وزیراعظم تھریسا مئے کو یورپی یونین سے نکلنے کے لئے حکومت کی نئی حکمت عملی جلد سے جلد پارلیمنٹ کو پیش کرنا ہو گی-

پارلیمنٹ میں حزب اختلاف کے لیڈر اور لیبر پارٹی کے رہنما جرمی کوربین نے ایوان میں ووٹنگ کے بعد کہا کہ اراکین پارلیمنٹ نے یہ ثابت کر دیا ہے کہ وہ یورپی یونین سے علیحدگی کے لئے حکومتی اسٹریٹیجی کے حق میں نہیں ہیں-

انہوں نے کہا کہ تھریسا مئے کی اسٹریٹیجی ناکام ہو چکی ہے اور اب انہیں بریگزیٹ کے لئے اپنا جامع پروگرام پیش کرنا ہو گا-

اس سے پہلے بھی برطانوی اراکین پارلیمنٹ، بریگزیٹ کے بارے میں حکومتی اقدام اور اسٹریٹجی کے خلاف ووٹ دے چکے ہیں۔ برطانیہ کو انتیس مارچ تک یورپی یونین سے الگ ہونا ہے-
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس