تاریخ شائع کریں۷ آذر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۹:۳۷
خبر کا کوڈ : 381498

ہندوستان نے پاکستان کی دعوت کو مسترد کر دیا ہے

سارک سربراہ اجلاس میں شرکت کے لئے پاکستان کی دعوت کو مسترد کر دیا
نئی دہلی نے سارک سربراہی اجلاس میں شرکت کے لیے وزیراعظم نریندر مودی کو دعوت دئیے جانے سے متعلق پاکستانی وزارت خارجہ اعلان کو یہ کہتے ہوئے مسترد کردیا ہے کہ ہندوستان مہمان نہیں بلکہ سارک کا بااثر ملک ہے۔
ہندوستان نے پاکستان کی دعوت کو مسترد کر دیا ہے
حکومت ہندوستان نے سارک سربراہ اجلاس میں شرکت کے لئے پاکستان کی دعوت کو مسترد کر دیا ہے۔

ہندوستانی ذرائع کے مطابق نئی دہلی نے سارک سربراہی اجلاس میں شرکت کے لیے وزیراعظم نریندر مودی کو دعوت دئیے جانے سے متعلق پاکستانی وزارت خارجہ اعلان کو یہ کہتے ہوئے مسترد کردیا ہے کہ ہندوستان مہمان نہیں بلکہ سارک کا بااثر ملک ہے۔
اس سے پہلے منگل کے روز پاکستان کی وزارت خارجہ کے ترجمان محمد فیصل نے کہا تھا کہ نئی دہلی کی جانب سے اسلام آباد میں سارک سربراہ اجلاس کے انعقاد کی مخالفت کے باوجود ان کا ملک ہندوستان کو اس اجلاس میں شرکت کی دعوت دے گا۔
ہندوستان نے دو ہزار سترہ میں بھی سارک سربراہی اجلاس کے پاکستان میں انعقاد کی مخالفت کی تھی جس کی وجہ سے یہ اجلاس موخر کر دیا گیا تھا۔

جنوبی ایشیا کے تعاون کی تنطیم سارک کا قیام انیس سو پچاسی میں عمل میں آیا تھا اور اس تنظیم میں ہندوستان، پاکستان، بنگلہ دیش، سری لنکا، نیپال، مالدیپ، افغانستان اور بھوٹان شامل ہیں۔
سن دو ہزار سات میں افغانستان کو بھی اس تنظیم میں رکنیت دی گئی تھی جس کے بعد اس تنظیم کے رکن ملکوں کی تعداد آٹھ ہو گئی ہے۔
ایران اور چین کو اس تنظیم میں مبصر کی حثیت حاصل ہے۔  
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس