تاریخ شائع کریں۱۹ آبان ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۵:۵۴
خبر کا کوڈ : 375999

امریکہ کی پاکستان سے توقعات بہت زیادہ ہیں

امریکی نائب وزیر خارجہ کے حالیہ دورہ پاکستان کے باوجود یہ تعلقات سردمہری کا شکار
افغانستان کے معاملے میں پاکستان سے امریکی توقعات بہت زیادہ ہیں لیکن ہم نے انہیں بتادیا ہے کہ جو ہم کرسکے کریں گے لیکن اس قدر نتائج نہیں دے سکتے۔
امریکہ کی پاکستان سے توقعات بہت زیادہ ہیں
پاکستان اور امریکہ کے تعلقات بدستور کشیدہ ہیں اور امریکی نائب وزیر خارجہ کے حالیہ دورہ پاکستان کے باوجود یہ تعلقات سردمہری کا شکار ہیں۔

پاکستان کا کہنا ہے کہ افغانستان کے معاملے میں پاکستان سے امریکی توقعات بہت زیادہ ہیں لیکن ہم نے انہیں بتادیا ہے کہ جو ہم کرسکے کریں گے لیکن اس قدر نتائج نہیں دے سکتے۔

اسلام آباد میں سینیٹ پالیسی ریسرچ فورم سے خطاب کے دوران پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ ہم دنیا سے متوازن تعلقات چاہتے ہیں، وزیراعظم کا دورہ چین بہت مثبت رہا، دو ماہ میں ایران کے وزیر خارجہ دو مرتبہ پاکستان آئے جو بہت مثبت ہے۔ امریکا سے ہمارے تعلقات اچھے نہیں ہیں، افغانستان پر امریکا کی توقعات ہم سے زیادہ ہیں، ہم نے انہیں بتادیا ہے کہ جو ہم کرسکے کریں گے لیکن اس قدر نتائج نہیں دے سکتے۔

مشرق وسطیٰ بالخصوص سعودی عرب سے پاکستان کے تعلقات سے متعلق ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ سعودی عرب میں 30 لاکھ پاکستانی کام کرتے ہیں اور ہم ان میں اضافہ چاہیں گے، ہم مقامات مقدسہ کا تحفظ کریں گے اس کے علاوہ غیر جانبدار رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے ہندوستان سے مذاکرات کے لیے خط لکھ کربات کرنے کو کہا، تاہم ہندوستان نے اس خط کا مثبت جواب نہیں دیا۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس