تاریخ شائع کریں۱۲ آبان ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۴:۳۶
خبر کا کوڈ : 373958

شام کی سرحدوں سے داعش کے ٹھکانے تباہ

عراق اور شام کی سرحدوں پر پوری طرح امن قائم ہوگیا ہے
عراق میں سیکورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ عراق اور شام کی سرحدوں پر پوری طرح امن قائم ہوگیا ہے
شام کی سرحدوں سے داعش کے ٹھکانے تباہ
عراق میں سیکورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ عراق اور شام کی سرحدوں پر پوری طرح امن قائم ہوگیا ہے

عراق میں سیکورٹی سے متعلق انفارمیشن سینٹر کے ترجمان بریگیڈیر یحیی رسول نے عراق اور شام کی مشترکہ سرحدوں کے زیرو پوائنٹ کا معائنہ کرتے وقت کہا کہ عراقی فوج اور رضاکارفورس الحشد الشعبی مشترکہ سرحدوں پر دہشت گردوں کی ہر طرح کی جارحیتوں کا مقابلہ کرنے کے لئے پوری طرح تیار ہیں- اس درمیان عراق کی قومی سلامتی کے امور کے ادارے کے سربراہ قاسم الاعرجی نے کہا ہے کہ شام کے مشرقی علاقے میں شامی کردوں کی ملیشیا  کی پسپائی اور اس علاقے میں دہشت گرد گروہ داعش کی نقل حرکت کے دائرے کا پھیلنا ذہنوں میں سوال پیدا کررہا ہے - انہوں نے کہا  اس سے پہلے عراق کے مغربی صوبے الانبار کے مغربی محاذ پر عراقی فوج اور سیکورٹی فورس کی تعداد بڑھا دی گئی ہے - عراق کے قومی سلامتی کے امور کے ادارے کے سربراہ کا کہنا تھاکہ شام کے مشرقی علاقے دیرالزور سے شامی کردملیشیا کی پسپائی کے بعد اس علاقے میں داعش کے سرگرم ہوجانے کے بعد عراق اور شام کی مشترکہ سرحدوں پر الحشد الشعبی نے اپنے مورچے اور زیادہ مستحکم بنالئے ہیں - پچھلے چند روز کے دوران داعش نے شام اور عراق کی مشترکہ سرحدوں کے قریب خود کو پہنچانے کی کوشش کی ہے اور اس صورتحال کے پیش نظر مبصرین کا کہنا ہے کہ شام کے مشرقی علاقے میں داعش کی یہ سرگرمیاں امریکی حمایت سے انجام پارہی ہیں کیونکہ امریکا کی کوشش ہے کہ جیسے بھی ہو شام میں داعش کو باقی رکھا جائے
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس