تاریخ شائع کریں۲۰ مهر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۲۰:۳۰
خبر کا کوڈ : 367704

مزاحمت کا راستہ قربانیوں اور فداکاریوں کا راستہ ہے

حزب اللہ لبنان کے سربراہ سید حسن نصراللہ نے کہا ہے
جنوبی لبنان میں حزب اللہ کے شہید کمانڈر عماد مغنیہ کی والدہ کی یاد میں منعقدہ مجلس ترحیم سے خطاب کرتے ہوئے سید حسن نصراللہ کا کہنا تھا کہ دنیا کی ہر تحریک اور سماج کو نفسیاتی جنگ کے دوران بہت سے بنیادی چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
مزاحمت کا راستہ قربانیوں اور فداکاریوں کا راستہ ہے
حزب اللہ لبنان کے سربراہ سید حسن نصراللہ نے کہا ہے کہ مزاحمت کا راستہ انتہائی مہنگا راستہ ہے جس میں بہترین جوانوں کی قیمتی جانوں کا نذرانہ پیش کرنا پڑتا ہے۔

جنوبی لبنان میں حزب اللہ کے شہید کمانڈر عماد مغنیہ کی والدہ کی یاد میں منعقدہ مجلس ترحیم سے خطاب کرتے ہوئے سید حسن نصراللہ کا کہنا تھا کہ دنیا کی ہر تحریک اور سماج کو نفسیاتی جنگ کے دوران بہت سے بنیادی چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
انہوں نے خطے پر ایران کے قبضہ کرنے لینے کے بارے میں امریکی صدر ٹرمپ کے حالیہ بیان کو ایک جانب ایران کی عظمت کے اعتراف دوسری جانب خطے کے ملکوں کو ڈرانے اور زیادہ سے زیادہ اسلحہ فروخت کرنے کی کوشش قرار دیا۔
انہوں نے کہا کہ ٹرمپ اس قسم کے بیانات کے ذریعے ان ملکوں کو مزید دوہنے، مال اینٹھنے اور زیادہ سے زیادہ اسلحہ خریدنے پر مجبور کرنا چاہتے ہیں۔
سید حسن نصراللہ نے صاف الفاظ میں کہا کہ امریکی صدر ان ملکوں کے حکمرانوں اور ان کی حکومت کے دوام کے بدلے ان سے باج وصول کر رہے ہیں۔
انہوں نے اس پات پر افسوس کا اظہار کیا کہ ان ملکوں نے ٹرمپ پر بھروسہ کر رکھا ہے جو ان سے باج بھی لیتا ہے اور ہر روز ان کی تذلیل بھی کرتا ہے۔
حزب اللہ کے سربراہ نے کسی کا نام لیے بغیر عرب ملکوں کو نصیحت کی کہ وہ اپنی پالیسیوں اور طرز حکمرانی پر نظر ثانی کریں۔

انہوں نے استفسار کیا کہ جب تمہاری دولت ختم ہو جائے گی تو ٹرمپ اس وقت تمہارے ساتھ کیا سلوک کرے گا۔
سید حسن نصراللہ نے اسرائیلی عہدیداروں کے بیانات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ لبنان کے بعض مقامات کی تصاویر شائع کر کے دشمن عوام میں خوف و ہراس پھیلانا چاہتا ہے۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس