تاریخ شائع کریں۱۶ مهر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۴:۲۹
خبر کا کوڈ : 366162

چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی نمایاں ہونے لگی

حکومت چین نے امریکہ سے تیل کی خریداری مکمل طور پر بند کر دی۔
چین کی جہاز رانی کی کمپنی مرچنٹ کے مالک شیہ چون لین نے اتوار کے روز ایک انٹویو میں کہا ہے کہ چین اور امریکہ کے درمیان تجارتی جنگ کے شدّت اختیار کرجانے کے بعد چین نے امریکہ سے تیل کی خریداری مکمل طور پر بند کر دی۔
چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی نمایاں ہونے لگی
حکومت چین نے امریکہ سے تیل کی خریداری مکمل طور پر بند کر دی۔

ارنا کی رپورٹ کے مطابق چین کی جہاز رانی کی کمپنی مرچنٹ کے مالک شیہ چون لین نے اتوار کے روز ایک انٹویو میں کہا ہے کہ چین اور امریکہ کے درمیان تجارتی جنگ کے شدّت اختیار کرجانے کے بعد چین نے امریکہ سے تیل کی خریداری مکمل طور پر بند کر دی۔

انھوں نے چین کی آئل ریفائنریوں اور تاجروں سے اپیل کی ہے کہ وہ امریکہ سے تیل کی خریداری کرنے سے گریز کریں۔

اگست میں چین نے امریکہ سے ستّانوے لاکھ بیرل تیل خریدار تھا تاہم دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات میں کشیدگی آنے کے بعد ستمبر میں تیل کی یہ خریداری صرف چھے لاکھ بیرل پر پہنچ گئی۔

دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی جنگ، امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے اسٹیل اور المونیئم پر ٹیکس لگائے جانے کے بعد شروع ہوئی ہے اور دونوں ملکوں کی جانب سے اب تک مختلف مصنوعات اور اشیا پر پچاس ارب ڈالر کا ٹیکس لگایا جا چکا ہے۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس