تاریخ شائع کریں۱۱ مهر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۹:۴۵
خبر کا کوڈ : 364817

اسرائیلی حملے کی صورت میں اپنا بھر پور دفاع کریں گے

عراق کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ان کا ملک اسرائیلی حملے کی صورت میں اپنا بھر پور دفاع کرے گا۔
عراق پر حملے کی اسرائیلی دھمکیوں کے بارے میں ڈاکٹر ابراہیم الجعفری کا کہنا تھا کہ ان کا ملک جنگ میں ہرگز پہل نہیں کرے گا تاہم حملے کی صورت میں پوری قوت کے ساتھ اپنا دفاع کرے گا۔
اسرائیلی حملے کی صورت میں اپنا بھر پور دفاع کریں گے
عراق کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ان کا ملک اسرائیلی حملے کی صورت میں اپنا بھر پور دفاع کرے گا۔

 رشیا ٹوڈے سے بات چیت کرتے ہوئے ڈاکٹر ابراہیم الجعفری نے کہا کہ عراق، جنگ کو عالمگیر بنائے جانے کا مخالف ہے۔ عراق پر حملے کی اسرائیلی دھمکیوں کے بارے میں ڈاکٹر ابراہیم الجعفری کا کہنا تھا کہ ان کا ملک جنگ میں ہرگز پہل نہیں کرے گا تاہم حملے کی صورت میں پوری قوت کے ساتھ اپنا دفاع کرے گا۔
 انہوں نے شمالی عراق میں ترک فوج کی موجودگی کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ بغداد کی حکومت سن دو ہزار سترہ سے اس معاملے کو افہام و تفہیم کے ذریعے نمٹانے کی کوشش کر رہی ہے۔
 بغداد دمشق تعلقات کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ عراق اور شام کو مشترکہ دشمن کا سامنا ہے اور دونوں ممالک خطے میں دہشت گردی کے خلاف فرنٹ لائن اسٹیٹ کا کردار ادا کر رہے ہیں۔
 عراق کے وزیر خارجہ نے اپنے ملک کی تعمیر نو کے بارے میں کہا کہ ان کے ملک کو دنیا کے ایک سو بیالیس ملکوں کے دہشت گردوں نے برباد کیا ہے لہذا عراق کی تعمیرنو میں حصہ لینا پوری عالمی برادری کی ذمہ داری ہے۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس