تاریخ شائع کریں۲۳ شهريور ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۵:۵۳
خبر کا کوڈ : 359101

پاکستان کو امریکہ نے ناکارہ ہیلی کاپٹر تحفے میں دیے تھے

ہیلی کاپٹرز پاکستان کو امریکا نے ریلیف اور ریسکیو کے لیے تحفہ میں دیے تھے
پاکستان کی وفاقی حکومت کی جانب سے نیلامی کے لئے پیش کئے گئے چاروں امریکی ہیلی کاپٹرز میں سے ایک بھی اڑان بھرنے کے قابل نہیں۔
پاکستان کو امریکہ  نے ناکارہ ہیلی کاپٹر تحفے میں دیے تھے
ہیلی کاپٹرز پاکستان کو امریکا نے ریلیف اور ریسکیو کے لیے تحفہ میں دیے تھے۔

پاکستانی میڈیا کے مطابق پاکستان کی وفاقی حکومت کی جانب سے نیلامی کے لئے پیش کئے گئے چاروں امریکی ہیلی کاپٹرز میں سے ایک بھی اڑان بھرنے کے قابل نہیں۔

وزیراعظم کے دفترسے کابینہ ڈویژن کو ایک خط بھیجا گیا ہے جس میں نیلام کیے جانے والے چاروں ہیلی کاپٹروں کی حالت زار سے آگاہ کیا گیا ہے۔

خط کے مطابق حکومت کی جانب سے نیلام کیے جانے والے چاروں ہیلی کاپٹر اڑان بھرنے کے قابل نہیں ہیں، چاروں ہیلی کاپٹر طویل عرصے سے پرزوں کی عدم دستیابی کے باعث خراب حالت میں ہیں اور ان ہیلی کاپٹروں کو اڑنے کے قابل بنانے کے لیے اچھی خاصی رقم خرچ کرنی پڑے گی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ 93-1992 ماڈل کے ہیلی کاپٹرز کو تو چند پرزے ڈال کر قابل استعمال بنایا جا سکتا ہے لیکن اس پر بھی کروڑوں روپے خرچ ہوں گے تاہم 74-1971 ماڈل کے ہیلی کاپٹرز کو اڑنے کے قابل بنانا مہنگا ترین اور مشکل کام ہے، ہیلی کاپٹرز میں بعض پرزے ایسے ہوتے ہیں جنہیں ایک خاص مدت کے بعد بدلنا ہوتا ہے چاہے یہ ہیلی کاپٹر استعمال ہو یا نہ ہو۔

واضح رہے کہ یہ چاروں ہیلی کاپٹرز پاکستان کو امریکا نے ریلیف اور ریسکیو کے لیے تحفے میں دیے تھے۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس