تاریخ شائع کریں۲۰ اسفند ۱۳۹۶ گھنٹہ ۲۳:۴۲
خبر کا کوڈ : 317569

ایران کے وزیرخارجہ اسلام آباد پہنچ گئے

وزارت خارجہ کے سینئر حکام نے اسلام آباد ایئرپورٹ میں ایرانی وزیرخارجہ کا استقبال کیا۔
جواد ظریف کے ہمرا اقتصادی، تجارتی اورکاروباری شعبوں کے نمائندوں پر مشتمل 30 رکنی وفد بھی اسلام آباد پہنچ گیا جو کاروباری حوالے سے مذاکرات کرے گا۔
ایران کے وزیرخارجہ اسلام آباد پہنچ گئے
ایران کے وزیرخارجہ محمد جواد ظریف پاکستان کے 3 روزہ سرکاری دورے پر اسلام آباد پہنچ گئے جہاں وہ میزبان قیادت ملاقات کریں گے۔

وزارت خارجہ کے سینئر حکام نے اسلام آباد ایئرپورٹ میں ایرانی وزیرخارجہ کا استقبال کیا۔ ریڈیو پاکستان کی رپورٹ کے مطابق جواد ظریف کے ہمرا اقتصادی، تجارتی اورکاروباری شعبوں کے نمائندوں پر مشتمل 30 رکنی وفد بھی اسلام آباد پہنچ گیا جو کاروباری حوالے سے مذاکرات کرے گا۔

جواد ظریف باہمی سیاسی مشاورتی اجلاس میں ایرانی وفد کی قیادت کریں گے جس میں تجارت، توانائی، ثقافت اورعوامی رابطوں سمیت مختلف شعبوں پرگفتگو ہوگی۔

جواد ظریف اپنے اس دورے میں صدر مملکت ممنون حسین اور وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے بھی ملاقات کریں گے۔

ایرانی وزیر خارجہ اپنے 3 روزے دورے میں اسلام آباد اور کراچی میں ایران اور پاکستان کے کاروباری اور تجارتی نمائندوں کے دو اجلاسوں سے بھی خطاب کریں گے۔

جواد ظریف باہمی تعلقات کے موضوع پر پاکستانی تھنک ٹینک سے بھی خطاب کریں گے۔ خیال رہے کہ ایرانی حکومت کی جانب سے حال ہی میں چاہ بہار بندرگار کا ایک ٹرمینل پاکستان کے حریف بھارت کو دیا تھا جبکہ بھارت اس بندرگارہ کو گوادر کے متبادل کے طور پر دیکھ رہا ہے۔

پاکستان اور چین کے درمیان پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) کے معاہدوں کے بعد گوادر بندرگاہ کی اہمیت مشرق وسطیٰ سمیت کئی پڑوسی ممالک کے لیے مزید بڑھ گئی ہے۔

گزشتہ سال دسمبر میں شروع کی گئی چاہ بہار بندرگاہ کے ذریعے بھارت اپنے حریف پاکستان کو پس پشت ڈال کر اپنی نئی تجارتی راہداری کو ترتیب دینا چاہتا تھا۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس