تاریخ شائع کریں۶ شهريور ۱۳۹۶ گھنٹہ ۱۳:۱۹
خبر کا کوڈ : 281465

سمندری طوفان ہاروے کے نتیجے میں تباہ کن سیلاب

مختلف حادثات میں 5 افراد ہلاک/ 220 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے تیز ہوائیں
سمندری طوفان کے باعث 13فٹ اونچی لہریں دیکھی گئیں جبکہ 50 انچ تک بارش بھی ریکارڈ کی گئی
سمندری طوفان ہاروے کے نتیجے میں تباہ کن سیلاب
امریکی ریاست ٹیکساس میں سمندری طوفان ہاروے کے نتیجے میں آنے والے تباہ کن سیلاب میں 5 افراد ہلاک اور متعدد لاپتہ ہوگئے ہیں۔

امریکی ریاست ٹیکساس میں گزشتہ پچاس برسوں کے دوران آنے والے سخت ترین سمندری طوفان ہاروے نے تباہی مچادی، مختلف حادثات میں 5 افراد ہلاک ہو گئے اور تیزہواؤں کے باعث سیکڑوں مکانات تباہ ہوگئے۔ سمندری طوفان کے باعث 13فٹ اونچی لہریں دیکھی گئیں جبکہ 50 انچ تک بارش بھی ریکارڈ کی گئی۔ اس دوران 220 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے تیز ہوائیں بھی چلتی رہیں جس کے باعث کئی مقامات پر درخت اور بجلی کے کھمبے گرگئے جبکہ سیکڑوں مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔

طوفان کے نتیجے میں ٹیکساس میں تیز ہواؤں کے ساتھ موسلا دھار بارش ہوئی اور نشیبی علاقوں میں سیلاب کی صورتحال پیدا ہو گئی۔ امریکا کی نیشنل ویدر سروس کا کہنا ہے کہ سب سے زیادہ ٹیکساس کا شہر ہیوسٹن متاثر ہوا ہے جہاں ہنگامی حالت نافذ کر دی گئی ہے جب کہ سڑکوں پر کئی کئی فٹ پانی جمع ہے اور سفر کرنا تقریباً نا ممکن ہے۔

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ہیوسٹن میں 24.1 انچ بارش ریکارڈ کی گئی جس کی وجہ سے ہزاروں افراد گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے جب کہ اب تک ایک ہزار کے قریب افراد کو امدادی عملے کی جانب سے ریسکیو کیا جا چکا ہے۔ تیز ہواؤں اور مسلسل بارش کی وجہ سے ریسکیو آپریشن میں مشکلات کا سامنا ہے جبکہ ہزاروں افراد بجلی کی فراہمی سے بھی محروم ہو گئے ہیں۔

ٹیکساس کے گورنر ایبٹ نے ریسکیو اور تعمیر نو آپریشن کے لیے 1800 فوجی اہلکاروں کو متاثرہ علاقوں کی جانب روانہ کر دیا ہے جب کہ ان کا کہنا ہے کہ رواں ہفتے کے دوران مزید بارشوں کا بھی امکان ہے۔

واضح رہے کہ ہیوسٹن امریکا کے گنجان آباد ترین شہروں میں سے ایک ہے جس کی آبادی تقریباً 66 لاکھ ہے۔
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس