تاریخ شائع کریں۱۶ آذر ۱۳۹۲ گھنٹہ ۹:۴۸
خبر کا کوڈ : 147405
سعودی انٹیلیجینس ادارے کے سابق سربراہ:

سعودی عرب کے امریکہ کے ساتھ روابط میں کشیدگی

تنا (TNA) برصغیر بیورو
سعودی عرب کے انٹیلیجینس ادارے کے سابق سربراہ نے شام و فلسطین کے مسئلہ پر امریکہ کے ساتھ ریاض کے بڑھتے ہوئے اختلافات کی خبر دی ہے.
سعودی عرب کے امریکہ کے ساتھ روابط میں کشیدگی

تقریب نیوز (تنا):سعودی عرب کے انٹیلیجینس ادارے کے سابق سربراہ نے شام و فلسطین کے مسئلہ پر امریکہ کے ساتھ ریاض کے بڑھتے ہوئے اختلافات کی خبر دی ہے۔ 

فارس نیوز نے مغربی میڈیا کے حوالے سے رپورٹ دی ہے کہ سعودی عرب کے انٹیلیجینس ادارے کے سابق سربراہ ترکی الفیصل نے گذشتہ روز امریکہ کے ساتھ ریاض کے تعلقات میں بے اعتمادی کے فضاء کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کے ساتھ سعودی عرب کے تعلقات ایک نازک دور سے گزر رہے ہیں اور بے اعتمادی کی فضاء میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے اور شام و فلسطین کے حوالے سے دونوں ملکوں میں اختلافات جوں کے توں باقی ہیں۔ 

سعودی عرب کے انٹیلیجینس ادارے کے سابق سربراہ نے مزید کہا کہ امریکہ و ریاض کے تعلقات میں بہت زیادہ نشیب و فراز پایا جاتا ہے اور دونوں ملکوں کے روابط حساس دور سے گزر رہے ہیں۔ 

سعودی عرب کے انٹیلیجینس ادارے کے سابق سربراہ کا ریاض و واشنگٹن کے حکام کے درمیان موجودہ اختلافات کا اعتراف ایسی صورت حال میں کیا ہے کہ سعودی عرب کے انٹیلیجینس ادارے کے سربراہ بندر بن سلطان نے منگل کے دن ماسکو میں روس کے صدر پوتین سے ملاقات میں جنیوا ٹو مذاکرات کے لئے اپنی آمادگی کے حوالے سے بات چیت کی ہے۔

منبع : ابنا
آپ کا نام
آپکا ایمیل ایڈریس