داعش پر دباؤ کم کرنے سے ناقابل تلافی نقصان ہوگا

امریکی چیئرمین آف جوائنٹ چیفس آف اسٹاف جنرل جوزف ڈنفورڈ نے کہا
امریکی چیئرمین آف جوائنٹ چیفس آف اسٹاف جنرل جوزف ڈنفورڈ نے کہا ہے کہ امریکا کا افغانستان سے جنگ میں مکمل کامیابی کے بغیر انخلاء ایک اور نائن الیون کا موجب بنے گا۔
تاریخ شائع کریں : شنبه ۱۷ آذر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۴:۳۹
موضوع نمبر: 384200
 
امریکی چیئرمین آف جوائنٹ چیفس آف اسٹاف جنرل جوزف ڈنفورڈ نے کہا ہے کہ امریکا کا افغانستان سے جنگ میں مکمل کامیابی کے بغیر انخلاء ایک اور نائن الیون کا موجب بنے گا۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کی جانب سے منعقد کردہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے امریکی جنرل نے کہا کہ شدت پسند جماعتوں داعش اور القاعدہ پر دباؤ کم کرنے کے ناقابل تلافی نقصانات ہوں گے، یہ تنظیمیں متحد ہوکر نئی قوت کے ساتھ سامنے آئیں گی اور امریکیوں پر بھرپور حملے کریں گی۔

جنرل جوزف ڈنفورڈ نے مزید کہا کہ امریکی فوجیوں کی افغانستان میں موجودگی سے دہشت گردوں کو پنپنے کا موقع نہیں ملے گا اور نہ ہی دہشت گردوں کے مختلف گروہ متحد ہو سکیں گے۔ 17 سالہ جنگ کو ادھوری چھوڑنا عقل مندی نہیں ہوگی۔ امریکی فوجیوں نے افغانستان میں بے پناہ قربانیاں دی ہیں۔

امریکی جنرل کا یہ بیان ایسے میں سامنے آیا ہے کہ گزشتہ 17 سال سے امریکہ اور نیٹو فورسز کی افغانستان میں بھرپور موجودگی کے باوجود نہ فقط اس ملک میں امنیت برقرار نہیں ہوئی ہے بلکہ اس ملک کے حالات دن بدن خراب سے خراب تر ہوتے جا رہے ہیں اور آئے روز درجنوں افراد دہشتگردانہ کارروائیوں کی بھینٹ چڑھ رہے ہیں اور پوست کی کاشت میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے۔
Share/Save/Bookmark