فرانسیسی حکومت کا پیٹرول کی قیمتوں کی واپسی کا مشروط اعلان

فرانس میں میڈیا ذرائع کا کہنا ہے
فرانس میں ایندھن اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف یلو جیکٹ مظاہروں کے شرکا کے مطالبات مان لئے گئے ہیں اور فرانس کے وزیر اعظم جلد ہی ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کے حکومتی فیصلے کو معطل کرنے کا اعلان کر دیں گے۔
تاریخ شائع کریں : سه شنبه ۱۳ آذر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۵:۰۷
موضوع نمبر: 383039
 
فرانس میں ایندھن اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف یلو جیکٹ مظاہروں کے شرکا کے مطالبات مان لئے گئے ہیں اور فرانس کے وزیر اعظم جلد ہی ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کے حکومتی فیصلے کو معطل کرنے کا اعلان کر دیں گے۔

فرانس میں میڈیا ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم ایڈورڈ فلیپس جلد ہی ایندھن کی قیمتوں میں اضافے کے فیصلے کو معطل کرنے کا اعلان کر دیں گے-

فرانسیسی شہریوں کے احتجاجی مظاہرے جو یلو جیکٹ مظاہروں کے نام سے مشہور ہوئے، تین ہفتے قبل بیک وقت فرانس کے کئی اہم شہروں میں  شروع ہوئے جو تیزی کے ساتھ ملک کے دیگر علاقوں خاص طور پر دارالحکومت پیرس تک پھیل گئے-

احتجاجی مظاہروں کی چنگاری دو فرانسیسی شہریوں نے لگائی- انہوں نے سوشل میڈیا پر اپنے پیغام میں فرانسیسی شہریوں سے کہا کہ وہ ایندھن اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف ملک گیر مظاہرے کریں-

ان پرتشدد مظاہروں میں دسیوں افراد زخمی ہو گئے جبکہ کم سے کم تین افراد ہلاک ہو گئے جن میں ایک اسّی سالہ معمر خاتون بھی شامل ہے-

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف شروع ہونے والے مظاہروں نے بعد میں صدر میکرون کی اقتصادی اصلاحات کے خلاف احتجاج کا رنگ لے لیا اور ایک انقلاب کی شکل اختیار کر گیا-

ان مظاہروں سے صورتحال اتنی زیادہ خراب ہو چکی تھی کہ حکومت ملک میں ایمرجنسی کے نفاذ پر بھی غور کرنے لگی تھی-
Share/Save/Bookmark