فلسطینی عوام کی جدوجہد اور استقامت میں اسٹریٹیجک تبدیلی

تحریک حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ نے کہا
فلسطین کی تحریک حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ نے غزہ میں عظیم حق واپسی مارچ کو غاصب صیہونی حکومت کے مقابلے میں فلسطینی عوام کی جدوجہد اور استقامت و مزاحمت میں اسٹریٹیجک تبدیلی قرار دیا ہے۔
تاریخ شائع کریں : چهارشنبه ۷ آذر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۵:۴۳
موضوع نمبر: 381441
 
فلسطین کی تحریک حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ نے غزہ میں عظیم حق واپسی مارچ کو غاصب صیہونی حکومت کے مقابلے میں فلسطینی عوام کی جدوجہد اور استقامت و مزاحمت میں اسٹریٹیجک تبدیلی قرار دیا ہے۔

فلسطینی ذرائع کے مطابق فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کے سربراہ اسماعیل ہنیہ نے فلسطینیوں کو حق واپسی مارچ جاری رکھے جانے کی دعوت دیتے ہوئے کہا ہے کہ مسئلہ فلسطین کے اعتبار کی تقویت، فلسطینی پناہ گزینوں کی وطن واپسی کا حق، عوامی استقامت کی صفوں میں فلسطینی قوم میں اتحاد اور غزہ کا محاصرہ ختم کئے جانے کی ضرورت پر ایک بار پھر تاکید اس حق واپسی مارچ کے اہداف و نتائج میں سے ہے۔

فلسطینیوں کا پرامن حق واپسی مارچ، تیس مارچ یوم الارض کے موقع سے مسلسل جاری ہے اور اس راہ میں غاصب صیہونی فوجیوں کی جارحیت میں اب تک دو سو سینتالیس فلسطینی شہید اور پچّیس ہزار سے زائد دیگر زخمی ہو چکے ہیں۔

فلسطین سے ہی ایک اور خبر یہ ہے کہ صیہونی حکومت نے فلسطین کی قانون ساز اسمبلی کے نمائندے احمد عطون کو، کہ جنھیں اس نے اکّیس نومبر کو حراست میں لے لیا تھا، چار ماہ تک زیرحراست رکھے جانے کی منظوری دے دی ہے۔ انھیں اب تک کئی بار گرفتار کر کے قید میں رکھا جا چکا ہے۔
Share/Save/Bookmark