یمن میں برطانوی ہتھیاروں کے استعمال پر شدید احتجاج

سعودی عرب اور اس کے اتحادی ملکوں کو اسلحے کی فراہمی روک دینے کا مطالبہ
عالمی اداروں اور تنظیموں نے ایک بار پھر جنگ یمن بند کرنے اور امریکہ اور یورپ کی جانب سے سعودی عرب اور اس کے اتحادی ملکوں کو اسلحے کی فراہمی روک دینے کا مطالبہ کیا ہے۔
تاریخ شائع کریں : شنبه ۱۹ آبان ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۸:۳۹
موضوع نمبر: 376072
 
عالمی اداروں اور تنظیموں نے ایک بار پھر جنگ یمن بند کرنے اور امریکہ اور یورپ کی جانب سے سعودی عرب اور اس کے اتحادی ملکوں کو اسلحے کی فراہمی روک دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اسٹاپ وار نامی اتحاد نے یمن کے خلاف جنگ میں برطانوی ہتھیارں اور جنگی آلات کے استعمال کے خلاف احتجاج کے لیے پچھلے چند ماہ کے دوران مختلف شہروں میں متعدد مظاہرے اور سیمینار منعقد کیے ہیں۔ان پروگراموں کا مقصد سعودی عرب کے لیے برطانوی اسلحے کی فراہمی بند کرانے کے لیے رائے عامہ کے دباؤ میں اضافہ کرنا ہے۔اسی دوران پینتیس غیر سرکاری یمنی اور عالمی تنظیموں نے بھی اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ ایک کروڑ چالیس لاکھ یمنیوں کو بھوک کا خطرہ لاحق ہے لہذا جنگ یمن فوری طو پر بند کرائی جائے۔اس بیان میں عالمی برداری اور خاص طور سے امریکہ، برطانیہ اور فرانس سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ یمن کے خلاف جنگ میں سعودی عرب کی حمایت کے پالیسی پر نظر ثانی کریں۔اس بیان پر انسانی حقوق کی عالمی فیڈریشن ایف آئی ڈی ایچ، ایکشن اگینسٹ ہنگر، اوکسفام، ورلڈ ڈاکٹر اور یمنی ایسوسی ایشن نے دستخط کیے ہیں۔سعودی جارحیت میں ہزاروں یمنی شہریوں کی ہلاکت کے باوجود امریکہ اور برطانیہ سعودی عرب کی مسلسل حمایت کر رہے ہیں اور سعودی اتحاد کو اسلحے کی فراہمی بھی بند کرنے پر آمادہ نہیں۔امریکی وزارت خارجہ کے جمعے کے روز جاری کیے جانے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ رواں سال کے دوران دنیا بھر میں امریکی اسلحے کی فروخت ایک سو چھتیس ارب ڈالر سے تجاوز کرگئی ہے۔سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات امریکہ سے اسلحے خریدنے والے سب سے بڑے ممالک شمار ہوتے ہیں اور یہ ہتھیار جنگ یمن کے دوران یمنی شہریوں کے قتل عام کے لیے استعمال کیے جارہے ہیں۔امریکہ کے بعد برطانیہ، فرانس، اٹلی اور جرمنی سعودی عرب کو سب سے زیادہ اسلحے فروخت کرنے والے ممالک ہیں۔سعودی حکومت نے اپنے بعض اتحادیوں کے ساتھ مل کر مارچ دوہزار پندرہ سے یمن کو جارحیت کا نشانہ بنانے کے علاوہ اس ملک کا زمینی، فضائی اور سمندری محاصرہ بھی کر رکھا ہے۔سعودی حکومت اور اس کے اتحادیوں کی جنگ اور جارحیت کے نتیجے میں اب تک چودہ ہزار سے زائد یمنی شہری شہید ہوچکے ہیں جبکہ لاکھوں لوگوں کو اپنا گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہونا پڑا ہے۔
Share/Save/Bookmark