امریکہ کی جارحانہ پالیسیاں دنیا کو نقصان پہچا رہیں ہیں

اقوام متحدہ میں اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے کہا
امریکہ کے عالمی معاہدوں سے انحراف اور اس کی تسلط پسندانہ پالیسیوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ اسے امریکہ کی یکطرفہ اور متکبرانہ پالیسیوں کا مقابلہ کرنا چاہیے۔
تاریخ شائع کریں : شنبه ۱۹ آبان ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۵:۱۰
موضوع نمبر: 375979
 
اقوام متحدہ میں اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے امریکہ کے عالمی معاہدوں سے انحراف اور اس کی تسلط پسندانہ پالیسیوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ اسے امریکہ کی یکطرفہ اور متکبرانہ پالیسیوں کا مقابلہ کرنا چاہیے۔

اقوام متحدہ میں اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب غلام علی خوشرو نے گزشتہ روز امن اور عالمی سلامتی سے متعلق اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس سے خطاب میں یکطرفہ امریکی پالیسی اور اقدامات کو دنیا میں قانون کی بالادستی اور اقوام متحدہ کے منشور کے منافی قرار دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی من پسند اور جارحانہ پالیسیوں نے دنیا میں قانون اور اجتماعی تعاون کی پالیسی کو نقصان پہنچایا ہے۔ انہوں نے انسانی حقوق کونسل ، یونسکو ، پیرس معاہدے اور مشترکہ ایٹمی معاہدے سے امریکہ کے نکلنےکی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے یک طرفہ طور پر مشترکہ ایٹمی معاہدے سے خارج ہوکر سکیورٹی کونسل کی قرارداد نمبر 2231 کی خلاف ورزی کی ہے۔

اقوام متحدہ میں ایران کے نمائندے نے کہا کہ بین الاقوامی ایٹمی ایجنسی نے اپنی 12 رپورٹوں میں  ایٹمی معاہدے پر ایران کے عمل پیرا رہنے کی تائید کرتے ہوئے ایران کے ایٹمی پروگرام کو پرامن قراردیا ہے۔ اس موقع پر انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ دنیا امریکہ کو اپنی یکطرفہ پالیسی کو مزید فروغ دینے کی اجازت نہ دے اور اس سلسلے میں دنیا کے ممالک صرف باتوں کی حد تک نہیں بلکہ عملی طور پر امریکی پابندیوں کو مسترد کریں.
Share/Save/Bookmark