سعودی عرب کو ناروے نے دفاعی وسائل کی ترسیل بند کردی

مجرمانہ قتل کے پیش نظر سعودی عرب کو ہتھیاروں کی فروخت روک دی ہے۔
سعودی عرب کو عسکری مقاصد کے لیے دفاعی سامان کا برآمدی لائسنس جاری نہیں کریں گے۔ ناروےکا کہنا ہے کہ یہ اقدام سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے ضمن میں اٹھایا گیا ہے۔
تاریخ شائع کریں : شنبه ۱۹ آبان ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۴:۲۶
موضوع نمبر: 375964
 
ناروے نے سعودی عرب کے ہاتھوں سعودی صحافی جمال خاشقجی کے بہیمانہ اور مجرمانہ قتل کے پیش نظر سعودی عرب کو ہتھیاروں کی فروخت روک دی ہے۔

الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق ناروے کے وزیر خارجہ این ارکسن کا کہنا ہے کہ موجودہ صورتحال کے پیش نظر ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ سعودی عرب کو عسکری مقاصد کے لیے دفاعی سامان کا برآمدی لائسنس جاری نہیں کریں گے۔ ناروےکا کہنا ہے کہ یہ اقدام سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے ضمن میں اٹھایا گیا ہے۔

ادھر جرمنی نے گزشتہ ماہ واضح کیا تھا کہ وہ جمال خاشقجی کے قتل کے پس پردہ اسباب واضح نہ ہونے تک سعودی عرب کو اسلحہ فراہم نہیں کرے گا۔

 خیال رہے کہ سعودی عرب نے پہلے جمال خاشقجی کے قتل سے لا علمی کا اظہار کیا تھا تاہم بعد میں سامنے آنے والے حقایق اورعالمی دباو کے بعد اس قتل سے پردہ اٹھاتے ہوئے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے بہت قریبی ساتھی ڈپٹی انٹیلی جنس چیف احمد العسیری اور شاہی عدالت کے میڈیا ایڈوائزر سعود القحطانی کو برطرف کردیا تاہم اب بھی سعودی عرب خاشقجی کی لاش کو اہل خانہ کے حوالے کرنے سے گریز کررہا ہے۔
Share/Save/Bookmark