آیت اللہ ابراہیم زکزکی کی رہائی کی اپیل مسترد

نائیجیریا کی عدالت نے انصاف کے تقاضوں کو پامال کر دیا
نائیجیریا کی عدالت نے انصاف کے تقاضوں کو پامال کرتے ہوئے ملک کے سرکردہ مذہبی رہنما آیت اللہ ابراہیم زکزکی کی رہائی کی اپیل مسترد کر دی۔
تاریخ شائع کریں : جمعه ۱۸ آبان ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۳:۱۵
موضوع نمبر: 375692
 
نائیجیریا کی عدالت نے انصاف کے تقاضوں کو پامال کرتے ہوئے ملک کے سرکردہ مذہبی رہنما آیت اللہ ابراہیم زکزکی کی رہائی کی اپیل مسترد کر دی۔

ہمارے نمائندے کے مطابق کادونا اسٹیٹ کورٹ نے نائیجیریا کی اسلامی تحریک کے سربراہ آیت اللہ ابراہیم زکزکی کی درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے سماعت جنوری دو ہزار انیس تک کے لیے ملتوی کر دی۔
 آیت اللہ زکزکی کے وکیل ماکسوال کیون بتایا ہے کہ عدالت نے ان کے موکل کو ضمانت پر رہا کرنے سے انکار کر دیا۔
انہوں نے کہا کہ ہماری لیگل ٹیم عدالت کے فیصلے کا جائزہ لے رہی ہے۔
عدالت نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ آیت اللہ زکزکی پچھلے تین برس سے بغیر مقدمہ چلائے قید میں ہیں تاہم اپیل کی دوبارہ سماعت تک انہیں سیکورٹی اداروں کی تحویل میں رکھنے کا حکم دیا گیا ہے۔
 اس سے پہلے نائیجیریا کی فیڈرل کورٹ نے آیت اللہ ابراہیم زکزکی کی گرفتاری کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے رہا کرنے کا حکم دیا تھا لیکن اس فیصلے پر آج تک عمل درآمد نہیں کیا گیا۔
 قابل ذکر ہے کہ نائیجیریا کی اسلامی تحرک کے سربراہ آیت اللہ ابراہیم زکزکی سن دو ہزار پندرہ سے قید و بند کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں۔ نائیجیر کے شیعہ مسلمانوں نے گزشتہ ہفتے چہلم امام حسین علیہ السلام کے موقع پر دارالحکومت ابوجا میں آیت اللہ ابراہیم زکزکی کی رہائی کے لیے ایک بڑا مظاہرہ بھی کیا تھا جبکہ پرامن مظاہرین پر نائیجیریا کے سیکورٹی اہلکاروں کی فائرنگ میں کم سے کم پینتالیس مظاہرین شہید اور سو سے زائد زخمی ہو گئے تھے۔
Share/Save/Bookmark