شام کے شہر ہجین میں امریکی اتحاد کا فاسفورس بموں سے حملہ

نہاد بین الاقوامی اتحاد کے جنگی طیاروں نے شام کے شہر ہجین کے خلاف ممنوعہ ہتھیاروں کا استعمال کیا
امریکہ کی زیرکمان نام نہاد بین الاقوامی اتحاد کے جنگی طیاروں نے شام کے شہر ہجین کے خلاف ممنوعہ ہتھیاروں کا استعمال کرتے ہوئے فاسفورس بموں سے حملہ کیا ہے۔
تاریخ شائع کریں : چهارشنبه ۹ آبان ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۵:۳۲
موضوع نمبر: 373367
 
دہشت گردوں کے خلاف امریکہ کی زیرکمان نام نہاد بین الاقوامی اتحاد کے جنگی طیاروں نے شام کے شہر ہجین کے خلاف ممنوعہ ہتھیاروں کا استعمال کرتے ہوئے فاسفورس بموں سے حملہ کیا ہے۔
امریکہ کی زیرکمان نام نہاد بین الاقوامی اتحاد کے جنگی طیاروں کی جانب سے شام کے شہر ہجین پر ایسی حالت میں فاسفورس بم برسائے گئے ہیں کہ اس سے قبل تیرہ اکتوبر کو بھی امریکی اتحاد کے جنگی طیاروں نے ہجین پر ایسی ہی بمباری کی تھی۔
اس سے قبل شام کی وزارت خارجہ نے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل اور سلامتی کونسل کے چیئرمین کے نام اپنے مراسلوں میں امریکی اتحاد کی جانب سے شامی شہریوں کے خلاف ممنوعہ ہتھیاروں کے استعمال کا ذکر کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس قسم کے ہتھیاروں کا استعمال نہ صرف بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی بلکہ شامی عوام کے خلاف جنگی جرم کا ارتکاب ہے۔
واضح رہے کہ امریکہ نے یہ اتحاد، شامی حکومت کی مرضی کے خلاف اور اقوام متحدہ کے دائرے سے ہٹ کر قائم کیا ہے جو اب تک صرف دہشت گردوں کی حمایت میں ہی شامی عوام پر حملے کرتا رہا ہے۔
Share/Save/Bookmark