نائیجیریا میں شیعہ مسلمانوں پر ایک بار پھر وحشیانہ جارحیت

شیعہ مسلمانوں نے دارالحکومت ابوجا میں مظاہرہ کر کے اس ملک کی اسلامی تحریک کے رہنما آیت اللہ شیخ ابراہیم زکزکی کی رہائی کا مطالبہ کیا
ابھی تک شہید ہونے والے شیعہ مسلمانوں کی صحیح تعداد کا پتہ نہیں چل سکا ہے تاہم شاہدوں کا کہنا ہے کہ کوجبو کے علاقے میں زمین کی پڑی شیعہ مسلمانوں کی لاشوں کا مشاہدہ کیا گیا ہے
تاریخ شائع کریں : سه شنبه ۸ آبان ۱۳۹۷ گھنٹہ ۲۲:۲۸
موضوع نمبر: 373120
 
نائیجیریا کی فوج نے اس ملک کے شیعہ مسلمانوں کو ایک بار پھر وحشیانہ جارحیت کا نشانہ بناتے ہوئے دسیوں شیعہ مسلمانوں کو شہید کر دیا۔

روئیٹرز کی رپورٹ کے مطابق نائیجیریا کے سیکڑوں شیعہ مسلمانوں نے دارالحکومت ابوجا میں مظاہرہ کر کے اس ملک کی اسلامی تحریک کے رہنما آیت اللہ شیخ ابراہیم زکزکی کی رہائی کا مطالبہ کیا۔

ابھی تک شہید ہونے والے شیعہ مسلمانوں کی صحیح تعداد کا پتہ نہیں چل سکا ہے تاہم شاہدوں کا کہنا ہے کہ کوجبو کے علاقے میں زمین کی پڑی شیعہ مسلمانوں کی لاشوں کا مشاہدہ کیا گیا ہے۔

ہفتے کے روز بھی نائیجیریا کے فوجیوں نے ابوجا کے قریب فائرنگ کر کے کم سے کم دس حسینی عزاداروں کو شہید کر دیا تھا۔

نائیجیریا کی فوج نے تیرہ دسمبر دو ہزار پندرہ کو شہر زاریا کے حسینیہ پر حملہ کر کے جس میں شیخ زکزکی کے تین بیٹوں سمیت سیکڑوں شیعہ مسلمان شہید ہو گئے تھے، اس ملک کی اسلامی تحریک کے رہنما آیت اللہ شیخ ابراہیم زکزکی اور ان کی اہلیہ کو گرفتار کر لیا۔

نائیجیریا کے عوام نے مختلف شہروں میں بارہا مظاہرے کر کے اس ملک کی اسلامی تحریک کے رہنما آیت اللہ شیخ ابراہیم زکزکی کی رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔
Share/Save/Bookmark