دنیا کو تیل کی کمی پر تشویش لاحق ہے

ایران کے وزیر پیٹرولیم بیژں نامدار زنگنے نے کہا ہے
ایران کے وزیر پیٹرولیم بیژں نامدار زنگنے نے کہا ہے کہ سعودی عرب سمیت کوئی بھی تیل پیدا کرنے والا ملک عالمی منڈی میں ایرانی تیل کی کمی کو پورا نہیں کر سکتا۔
تاریخ شائع کریں : سه شنبه ۱۷ مهر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۷:۳۴
موضوع نمبر: 366723
 
ایران کے وزیر پیٹرولیم بیژں نامدار زنگنے نے کہا ہے کہ سعودی عرب سمیت کوئی بھی تیل پیدا کرنے والا ملک عالمی منڈی میں ایرانی تیل کی کمی کو پورا نہیں کر سکتا۔

 بیژن نامدار زنگنے نے یہ بات سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کے اس بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہی جس میں انہوں نے دعوی کیا تھا کہ ایران تیل میں ایک بیرل کمی کے بدلے سعودی عرب نے دو بیرل کا اضافہ کیا ہے۔
 بلومبرگ ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے بن سلمان نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے تیل پیدا کرنے والے ملکوں کی تنظیم اوپیک سے کہا ہے کہ وہ عالمی منڈیوں میں ایرانی تیل کی سپلائی میں کمی کو پورا کرنے کے لیے اپنی تیل کی پیداوار میں اضافہ کریں۔    
ایران کے وزیر پیٹرولیم بیژن نامدار زنگنے اس کے جواب میں کہا ہے کہ سعودی ولی عہد نے یہ بیان امریکی دباؤ  کے تحت دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس قسم کے مبالغہ آرائی سے ٹرمپ کو خوش کیا جا سکتا ہے لیکن تیل کی منڈی ایسے دعوؤں پر یقین نہیں کر سکتی۔
 انہوں نے کہا کہ عالمی منڈی کی صورتحال اور تیل کی قیمتوں میں اضافے پتہ چلتا ہے کہ دنیا کو تیل کی کمی پر تشویش لاحق ہے۔
قابل ذکر ہے کہ امریکی صدر نے ایٹمی معاہدے سے علیحدگی کے بعد ایران کے تیل کی فروخت کو صفر تک پہنچانے کی دھمکی ہے جس کے باعث عالمی منڈیوں میں تیل کی قیمت چھیاسی ڈالر فی بیرل تک پہنچ گئی ہے۔
Share/Save/Bookmark